سعودی عرب: حائل میں کھدائیوں کے دوران زمانہ قدیم کی انسانی آبادی دریافت

جبل عراف جبہ نخلستان کے اندر ایک جھیل کے قریب واقع ہے، یہ علاقہ حائل شہر کے شمال میں اور مملکت میں صحرائے نفود کے جنوب میں ہے۔ اس علاقے کی تاریخ پتھر کے دور سے ملتی ہے۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

سعودی عرب کے محکمہ آثار قدیمہ نے مملکت کے جنوبی علاقے حائل میں جبل عراف کے قریب کھدائیوں کے دوران ہزاروں سال پرانا شہر دریافت کیا ہے۔

سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی اس دریافت کی تفصیلات سے انداز ہوتا ہے کہ پتھر کے آخری دور میں اس مقام پر انسانی آبادی تھی۔ ان کی رہائش اور بودوباش کی تفصیلات ملتی ہیں۔

جبل عراف میں کھدائیوں کے دوران سامنے آنے والے اس شہر میں آبادی کے زمانے کے بارے میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ وہ پتھر کے دور کا ہے۔

اس دریافت کی تفصیلات سائنسی جریدے ’پولس ون‘ میں شائع کی گئی ہیں۔

سائنسی جریدے کے مطابق سعودی ہیریٹیج اتھارٹی نے گرین جزیرہ عرب پروجیکٹ میں جرمن میکس پلانک انسٹی ٹیوٹ کے تعاون سے ایک ایسی جگہ کا انکشاف کیا جو حائل کے علاقے میں جبل عراف کے قریب پتھر کےدور میں اہم ترین مقامات میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔

اس پروجیکٹ میں حصہ لینے والی سائنسی ٹیم میں سعودی عرب، آسٹریلیا، برطانیہ، اٹلی اور امریکا کے متعدد محققین اور ماہرین شامل تھے۔ یہ ماہرین ایک عرصے سے پتھر کے دور کی باقیات اور آثار قدیمہ پر تحقیق کر رہے ہیں۔

جبل عراف پر ہونے والی دریافت
جبل عراف پر ہونے والی دریافت

کوہ عراف کا محل وقوع

جبل عراف جبہ نخلستان کے قریب ایک جھیل کے طاس کے کنارے پر واقع ہے۔ یہ علاقہ حائل کے شمال میں اور مملکت میں صحرائے نفود کے جنوب میں واقع ہے۔ یہ مقام پتھر کے آخری دور سے جوڑا جاتا ہے۔ آثار قدیمہ کے شواہد، اعداد و شمار، لیبارٹری معائنوں اور تقابلی نتائج کے ذریعے سائٹ کی مدت کا تعین ہوتا ہے۔ ان نتائج سے اس علاقے کی ہزاروں سال پیشتر ثقافت کا بھی پتا چلتا ہے۔

اس میں ایک چٹان کی پناہ گاہ اور ایک کھلی جگہ شامل ہے جس میں ہولوسین دور کے وسط سے لے کر اب تک کی آباد کاری اور موسمی انسانی سرگرمیوں کے آثار شامل ہیں۔ ریڈیو کاربن (C14) کے لیبارٹری تجزیوں کے نتائج بتاتے ہیں کہ اس مقام پر انسانی آباد کاری کی چوٹی چھٹے دور میں تھی۔ اور ابتدائی پانچویں صدی قبل مسیح میں تھی۔

جبل عراف پر ہونے والی دریافت
جبل عراف پر ہونے والی دریافت

پتھر کے برتن اور اوزار

اس مقام پر کیے گئے کام کے نتائج سے پتھر کے درجنوں اوزار اور برتن سامنے آئے، جو کثرت سے استعمال کی وجہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہونے کے باوجود اس دور میں مرہ کے کاموں میں استعمال کی گواہی دیتے ہیں۔

ان گرائنڈرز کے ایک گروپ کے خوردبینی معائنہ کے نتائج کی بنیاد پر اس عرصے میں انسانوں کے استعمال کے طریقوں اور غذائی عادات کا تعین کرنے میں مدد ملتی ہے۔

پتھر کی چکیوں کے مطالعے کے نتائج نے اس دور میں انسان کی غذائی عادات اور معاشی زندگی اور پودوں اور جانوروں کی خوراک کی تیاری میں ان کے استعمال کا پتا چلتا ہے۔ اس سے معاشی تبدیلی کے آغاز اور انسان کے اس مرحلے سے منتقل ہونے کے کچھ اشارے ملتے ہیں۔

شکار کرنے اور خوراک کی پیداوار کے مراحل کے دستیاب وسائل سے اندازہ ہوتا ہے کہ انسان نے ان سادہ پتھر کی چکیوں کو روز مرہ کے کاموں کے لیے تیار کیا۔

جبل عراف
جبل عراف

نتائج

تحقیقات سے چیزوں کو گرائنڈ کرنے یا انہیں پیسنے کی تیاری میں استعمال ہونے والے والے آلات کے استعمال کی نشاندہی ہوتی ہے جو کہ آرٹ کے کاموں میں بڑے پیمانے پر استعمال ہوتے ہیں۔

یہ رنگین راک آرٹ کی ایک مخصوص خصوصیت ہیں جو کہ نویاتی دور میں شمالی جزیرہ نما عرب میں عام پائے گئے ہیں۔ اس کے ذریعے انسانوں نے رنگین پینٹنگز چھوڑیں۔ جانوروں کی چٹانوں کی تصویریں ان کے ماحول میں پھیلی ہوئی ہیں۔ ممکن ہے کہ ان رنگین روغن کو کاسمیٹکس اور بناؤ سنگھار کے طور پر بھی استعمال کیا گیا ہو۔

پتھر کی چکی کا استعمال جزیرہ نما عرب میں انسانی معاشروں کی زندگی کا ایک اہم حصہ بنا اور ان کا استعمال آج تک جاری ہے۔ نسل در نسل منتقل ہونے والے آثار قدیمہ کے مطالعے نے دیہی علاقوں کے بہت سے دیہاتوں میں پتھر کی چکی کی موجودگی کو ظاہر کیا ہے۔

ان مخصوص دریافتوں سے پتھر کے دور میں انسانی سرگرمیوں کے کچھ نامعلوم پہلوؤں پر روشنی پڑتی ہے۔ یہ تحریر کی دریافت، تاریخ کے ظہور، اور بلاگنگ سے پہلے کا دور ہے۔ یہ اس خطے میں انسانی پسند اور دستیاب ماحولیاتی وسائل کے اس کے استعمال کا بھی اشارہ دیتے ہیں۔

یہ دریافت آثار قدیمہ کے سروے اور کھدائی کے کام میں ہیریٹیج اتھارٹی کی کوششوں کے فریم ورک کے اندر آتی ہے۔ سعودی عرب کا محکمہ آثار قدیمہ اور اس کے ماہرین مملکت کے اندور اور باہر آثار قدیمہ کی تلاش کرتےہوئے وژن 2030 کے اہداف کی تکمیل کے لیے کام کررہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں