باہمت سعودی نوجوان محمد القحطانی جس نے معذوری کو شکست دے کراپنا ہر مشن پورا کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ایک معذور نوجوان محمد القحطانی معذور ہونے کے باوجود ایک بہادر اور باہمت انسان ہیں۔ معذوری نے انہیں یونیورسٹی میں تعلیم کے حصول اور اپنے مشاغل پورے کرنےسے نہیں روکا بلکہ انہوں نے معذوری کو شکست دے کراپنا ہر مشن پورا کیا۔

محمد القحطانی اپنی یونیورسٹی کی تعلیم مکمل کرنے ،سیاحت اور تفریحی پروجیکٹ مینجمنٹ میں مہارت حاصل کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔ ان کی کامیابی ان کی معذوری کو شکست دینے کی بہترین کوشش ہے۔ وہ پیدائشی طور پر معذور ہیں اوران کے جسم کا نچلا حصہ پیدائشی مفلوج ہے۔

انہوں نے ’العربیہ‘ چینل کو دیے گئے انٹرویو کے دوران کہا کہ ان کی عمر 19 سال ہے اور انہوں نے عمومی تعلیم میں بہترین گریڈ کے ساتھ اپنی تعلیم مکمل کی ہے۔ اب وہ شہزادہ سلطان بن عبدالعزیز یونیورسٹی میں سیاحت کے شعبے میں اپنی تعلیم مکمل کر رہے ہیں جہاں وہ تفریحی پروجیکٹ مینجمنٹ میں پڑھتے ہیں۔

القحطانی نے نشاندہی کی کہ ان کی خصوصیت مملکت کے وژن 2030 کے ساتھ مطابقت رکھتی ہے۔ وہ اس وژن کا حصہ بننے اور مملکت کی قیادت کو عزت دینے کی خواہش کے لیے پر عزم ہیں۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ ان کی معذوری نے انہیں فٹ بال اور تیراکی جیسے اپنے پسندیدہ مشاغل پر عمل کرنے سے نہیں روکا۔ انہوں نے تمام تعلیمی مراحل میں اپنے اساتذہ کی خدمات کو سراہا اور ان کے تعاون کا شکریہ ادا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size