سکاٹش وزیر اعظم کی ساس کی غزہ سے روتے ہوئے ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وقفے وقفے سے آواز اور آنسوؤں کے ساتھ، سکاٹ لینڈ کے وزیر اعظم حمزہ یوسف کی ساس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے۔ وسطی غزہ سے ریکارڈ کی گئی اس ویڈیو نے بحران کی سنجیدگی کو آشکار کردیا۔

حمزہ یوسف کی ساس الزبتھ النکلا نے اسرائیل کی جانب سے شمالی غزہ کے رہائشیوں سے اپنے گھر خالی کرنے کے مطالبے کی مذمت کی اور کہا کہ یہ میری آخری ویڈیو ہو گی۔

یہ ویڈیو حمزہ یوسف نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ ’ایکس‘ پر پوسٹ کی۔ اس میں کہا گیا کہ ایک ملین لوگ خوراک اور پانی سے محروم ہیں۔ اور وہ (اسرائیلی فوج) ان پر بمباری کر رہے ہیں۔ ہم انہیں کہاں رکھیں گے؟ کہاں ہے انسانیت؟ سکاٹش وزیر اعظم نے لکھا کہ یہ ہیں الزبتھ النکلا، میری بیوی کی والدہ ہیں۔

حمزہ یوسف نے مزید کہا کہ غزہ کی اکثریت کی طرح الزبتھ کا حماس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ اسے غزہ چھوڑنے کے لیے کہا گیا تھا، لیکن باقی آبادی کی طرح وہ بھی پھنسی ہوئی ہیں اور ان کے پاس جانے کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔

گذشتہ روز سکائی نیوز کو دیے گئے ایک انٹرویو میں حمزہ یوسف نے اپنی بے بسی اور پریشانی کے ساتھ ساتھ اپنی اہلیہ نادیہ کے جذبات کے بارے میں بات کی تو وہ رو پڑے۔

حمزہ یوسف نے برطانوی حکومت پر اس کی مدد نہ کرنے کا الزام بھی لگایا اور اپنی مایوسی اور غصے کا اظہار کیا۔ برطانوی وزیر خارجہ جیمز کلیورلی نے حمزہ یوسف کے لکھے گئے خط کا کوئی جواب دیا اور نہ ہی انہیں فون کیا تھا۔

قابل ذکر ہے کہ حمزہ یوسف کی شادی فلسطینی نادیہ النکلہ سے ہوئی ہے اور اس کے والدین جو شمال مشرقی سکاٹ لینڈ کے علاقے ڈنڈی میں رہتے ہیں غزہ میں اپنے اہل خانہ سے ملنے جا رہے تھے جب جنگ شروع ہو گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں