غزہ پر اسرائیلی بمباری بلا جواز ہے: برازیل کے صدر لوئیز اناشیو لولا دا سلوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کی مزاحمتی تنظیم اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کے حملہ کے باوجود اسرائیل کے پاس لاکھوں فلسطینیوں پر بمباری کا جواز نہیں ہے۔ برازیل کے صدر اور بائیں بازو کے ممتاز رہنما لوئیز اناشیو لولا دا سلوا نے اس امر کا اظہار سوشل میڈیا پر منگل کے روز اپنے خطاب میں کیا ہے۔

یہ تصادم تب شروع ہوا جب حماس کے مزاحمت کاروں نے اسرائیلی باڈر عبور کیا۔ اب تک اس تصادم میں ہزاروں لوگ دونوں طرف سے مارے جا چکے ہیں۔ 1948 میں جب سے اسرائیل قائم ہوا ہے غزہ پر ہونے والے یہ حملے امتیازی اور جان لیوا ہیں۔

خیال رہے کہ برازیلین صدر کے یہ خیالات سلامتی کونسل کے بلائے گئے اجلاس سے کچھ وقت پہلے سامنے آئیں ہیں۔ اس سے قبل سلامتی کونسل کے دو اجلاس غزہ پر اسرائیلی بمباری کے خلاف کوئی قرارداد منظور کرانے میں کامیاب نہیں ہوئے ان میں سے ایک قراداد برازیل کی پیش کردہ تھی۔

صدر لولا، جن کام ملک روٹیشن کے لحاظ سے سلامتی کونسل کی صدارت پر فائز ہے، نے سوشل میڈیا پر اپنے خطاب میں کہا سلامتی کونسل کے حالیہ اجلاسوں کے بے نتیجہ اجلاسوں کے بعد اقوام متحدہ کی کمزوری کھل کر سامنے آ گئی ہے۔ اگر اقوام متحدہ مظبوط ہوتا تو اہم کردار ادا کر سکتا تھا۔

صدر لولا نے مطالبہ کیا کہ انسانی بنیادوں پر غزہ کو امداد پہنچانے کے لیے راہداری کھولنے کے لیے بات چیت شروع کی جائے تاکہ فلسطینی اپنی زمین پر رہیں اور اسرائیل اپنی جگہ پر۔ برازیلی صدر کا تین ہفتے قبل ہونے والی سرجری کے بعد پہلا ہفتہ وار خطاب تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں