بجلی و پانی کی بندش پر فلسطینیوں کا مذاق اڑانے والی اسرائیلی خاتون کی ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک طرف فلسطینی گروپوں اور اسرائیلی افواج کے درمیان جنگ جاری ہے اور غزہ کے مکین گولوں اور وحشیانہ بمباری کی دہشت میں مبتلا ہیں وہیں دوسری طرف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر بھی ایک مختلف نوعیت کی جنگ چھڑی ہوئی ہے۔

7 اکتوبر کو حماس کے اچانک حملے کے بعد فلسطینی اور اسرائیلی دونوں طرف کے ہزاروں اکاؤنٹس اپنے مقصد کی حمایت اور دوسرے فریق کو لڑائی کا ذمہ دار ٹھہرانے کے لیے سرگرم ہیں۔ تاہم متعدد اسرائیلی خواتین کارکنوں اور سوشل میڈیا پر اثر انداز ہونے والوں نے ایسی ویڈیوز بھی شائع کی ہیں جنہیں اشتعال انگیز اور غیر انسانی قرار دیا گیا ہے۔

حالیہ کلپس نے فلسطینیوں اور بالخصوص غزہ سے ہمدردی رکھنے والوں میں بے اطمینانی کی ایک بڑی لہر کو جنم دیا ہے۔ ایک اسرائیلی خاتون کارکن نے ٹک ٹاک پر ایک ویڈیو پوسٹ کی جس میں وہ غزہ کے لوگوں کا مذاق اڑا رہی ہے۔ وہ اس بات کا مذاق اڑا رہی ہے کہ غزہ کی پٹی کے لوگ تین ہفتوں سے پانی اور بجلی کے بغیر زندگی کاٹ کر رہے ہیں۔

ویڈیو میں اسرائیلی انفلوئنسر کبھی جگ میں پانی ڈالنا شروع کردیتی ہے۔ بعض اوقات وہ شاور کا پانی کھول کر خوشی سے ناچنا شروع کردیتی ہے۔

پھر وہ اپنے چارج شدہ فون کو لہراتی ہے، پھر اسے بند کر کے کمروں کی لائٹس آن کرتی ہے۔ اپنی بے شرمی کے ان اقدامات سے اسرائیلی خاتون غزہ کی پٹی کے مکینوں کی تکلیف میں اضافہ کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

حال ہی میں اسی طرح کی متعدد ویڈیوز فلسطینیوں کے مصائب کا مذاق اڑانے کے لیے پھیلائی گئی ہیں۔ گزشتہ ہفتے ایک ویڈیو میں ایک بااثر شخص بھی غزہ کی ماؤں کے سانحات پر سوال اٹھاتے ہوئے نظر آیا۔ وہ کہ رہا ہے ’’میں تمہیں عمل کرنا سکھاؤں گا۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں