نتین یاھو کو 7 برس قبل خفیہ دستاویز میں حماس حملے سے خبردار کیا گیا

وزیر دفاع ایویگڈور لائبرمین نے 2016 میں یہ دستاویز نیتن یاھو کو پیش کی تھیں: اسرائیلی اخبار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی اخبار ’’یدیعوت احرونوت‘‘ نے ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم نتین یاھو کو 7 برس قبل خفیہ دستاویز میں حماس کے ممکنہ حملے سے خبردار کیا گیا تھا۔ وزیر دفاع ایویگڈور لائبرمین نے 2016 میں یہ دستاویز نیتن یاھو کو پیش کی تھیں۔ دستاویز میں کہا گیا تھا کہ حماس آئندہ تنازع کو اسرائیل منتقل کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ ان دستاویز میں آپریشن ’’ طوفان الاقصیٰ‘‘ سےمتعلق خبر دار کیا گیا تھا۔

11 صفحات پر مشتمل اس دستاویز میں حماس کے عزائم کی تفصیلات دی گئی ہیں۔ ان میں غزہ کے ارد گرد کی بستیوں پر قبضہ کرنا اور یرغمال بنانے کا تذکرہ کیا گیا۔ دستاویز میں بتایا گیا کہ حماس کے اس طرح کے حملے سے مادی نقصان کے ساتھ اسرائیل کے شہریوں کے شعور اور حوصلے کو شدید نقصان پہنچے گا۔ دستاویز میں کہا گیا کہ حماس کا بنیادی ہدف 2022 تک اسرائیل کو تباہ کرنا اور تمام فلسطینی زمینوں کو آزاد کرنا ہے۔

اسرائیلی اخبار کی ویب سائٹ نے بتایا کہ لائبرمین غزہ کو کنٹرول کرنے والی حماس کے بارے میں فکر مند تھے تاہم نیتن یاہو اور سابق چیف آف سٹاف گیڈی آئزن کوٹ سمیت جن فریقوں کو وارننگ پیش کی گئی تھی، ان میں سے کسی نے بھی اس منظر نامے کو مطلوبہ سنجیدگی سے نہیں لیا۔

ان دستاویز کو خفیہ راز کے طور پر پیش کیا گیا تھا۔ ان میں غزہ کی پٹی کی صورت حال کا جائزہ لیا گیا تھا۔ اس وقت کے وزیر دفاع کی پوزیشن کو تفصیل سے بیان کیا گیا تھا۔ اس میں آپریشن کے مطلوبہ اہداف بھی شامل تھے۔ اس دستاویز میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان اگلا تصادم آخری ہوگا۔ دستاویز میں کہا گیا کہ اس کا بہترین طریقہ حماس کے لیے یہ ہے کہ وہ اسرائیل کو فرنٹل سٹرائیک سے حیران کر دے۔

دستاویز میں کہا گیا تھا کہ حماس چاہتی ہے کہ اسرائیل کے خلاف اگلی مہم میں غزہ کی پٹی کے لیے لبنان، شام، اردن اور سینا میں اضافی میدان پیدا کئے جائیں۔ یہاں تک کہ دنیا بھر میں یہودی اہداف کو بھی نشانہ بنانے کی راہ ہموار کی جائے۔

دستاویز میں حماس کی طرف سے راکٹوں کی تعداد میں اضافے، زمینی اور سمندری شعبے میں جدید صلاحیتوں کو تیار کرنے کی کوششوں اور فضائی شعبے میں نئی صلاحیتوں کا بھی اشارہ دیا گیا تھا۔ دستاویز میں بتایا گیا کہ حماس کے پاس حملہ کرنے والے پلیٹ فارمز، انٹیلی جنس صلاحیتوں کو جمع کرنے کے لیے ڈرون اور گلوبل پوزیشننگ سسٹم کو جام کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں