سعودی عرب: تمام ملکوں کو "بزنس وزٹ" ویزا جاری کرنے کے دوسرے مرحلے کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں سرمایہ کاری اور خارجہ امور کی وزارتوں نے بقیہ دنیا کو شامل کرنے کے لیے الیکٹرانک طور پر بزنس وزٹ ویزا (وزیٹر انویسٹر) جاری کرنے کے لیے سروس کے دوسرے مرحلے کا آغاز کردیا۔

بیرون ملک سے سرمایہ کاروں کو اس معیاری سروس کی فراہمی سعودی ویژن 2030 سے ہم آہنگ ہوکر سرمایہ کاری کے شعبوں میں انویسٹمنٹ حاصل کرنے کی سعودی کوششوں کا حصہ ہے۔

ویژن 2030 کا مقصد دنیا بھر میں سرمایہ کاروں کے مزید طبقوں کو سعودی عرب کی طرف متوجہ کرنا ہے۔

انٹیگریٹڈ انویسٹر سروسز کے لیے وزارت سرمایہ کاری کے انڈر سیکریٹری محمد ابا حسین نے کہا کہ بزنس وزٹ ویزا "وزیٹر انویسٹر" ایک ایسا ویزا ہے جس کا مقصد غیر ملکی سرمایہ کاروں اور غیر ملکی اداروں کے ملازمین کو الیکٹرانک وزٹ ویزا کے لیے درخواست دینے کا موقع فراہم کرنا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ درخواست پر کارروائی کی جا سکتی اور ویزا وزارت خارجہ کے قومی ویزا پلیٹ فارم سے ڈیجیٹل طور پر جاری کرایا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ یہ معیاری سروس مشترکہ کوششوں اور وزارت خارجہ کے ساتھ مشترکہ تعاون کے نتیجے میں سامنے آئی ہے جس کا مقصد سرمایہ کاروں کو اضافی قدر کے ساتھ مناسب خدمات فراہم کرنا ہے۔

یاد رہے سعودی وزارت برائے سرمایہ کاری نے وزارت خارجہ کے تعاون سے اس سے قبل فوری الیکٹرانک ویزا سے مستفید ہونے والوں کے زمرے کو بڑھا کر مزید کیٹگریز کو شامل کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں