پانامہ: ہائی وے بلاک کرنے پر یونیورسٹی پروفیسر نے دو افراد کو قتل کردیا، ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پانامہ میں ایک ہولناک جرم کو کیمرے میں محفوظ کرلیا گیا۔ ایک ستر سالہ یونیورسٹی پروفیسر نے ہائی وے کو بلاک کرنے والے دو ماحولیاتی کارکنوں کو فائرنگ کرکے قتل کردیا۔

غصے میں آنے والا یہ شخص اپنی کار سے مغربی پانامہ کے چام سیکٹر میں ایک ہائی وے پر نکلا اور سیدھا ماحولیاتی مظاہرین کی طرف بڑھ گیا جنہوں نے گزشتہ منگل کو سڑک بلاک کر دی تھی۔ بوڑھے شخص نے ان میں سے دو افراد کو راہگیروں کی آنکھوں کے سامنے قتل کردیا۔

جائے وقوعہ پر موجود ڈرائیوروں میں سے ایک کے کیمرے نے اس واقعہ کی ویڈیو بنا لی ۔ سرمئی بالوں والا بوڑھا اپنی گاڑی سے باہر نکلا اور اپنی بندوق کھینچنے اور فائرنگ کرنے سے پہلے مظاہرین سے بحث کرنے کے لیے اپنی انگلی ہلانا شروع کر دی۔ ایجنسی فرانس پریس کے مطابق فائرنگ کے بعد ایک شخص موقع پر ہلاک ہوگیا اور دوسرے نے ہسپتال جا کر دم توڑا۔

پولیس نے ملزم کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کر دی۔ ملزم کے حوالے سے بتایا گیا کہ اس کا نام کینتھ ڈارلنگٹن ہے اور اس کی عمر 77 سال ہے۔ ملزم ایک وکیل اور یونیورسٹی کے پروفیسر ہیں۔ پانامہ کی شہریت کے علاوہ اس کے پاس امریکی شہریت بھی ہے۔

یہ چونکا دینے والا جرم ملک میں کان کنی کے ایک بڑے معاہدے کے خلاف جاری مظاہروں کے تیسرے ہفتے میں سامنے آیا۔ یہ معاہدہ کینیڈا میں قائم فرسٹ کوانٹم منرلز کو خطے کی سب سے بڑی تانبے کی کان کو کم از کم مزید 20 سال تک چلانے کی اجازت دیتا ہے۔ ماحولیاتی رکاوٹوں اور سڑکوں پر اعتراضات کی وجہ سے کمپنیوں کو روزانہ 80 ملین ڈالر کا نقصان ہو رہا ہے۔ اس احتجاج کے باعث ملک بھر کے سکول بھی ایک ہفتے سے زائد عرصے کے لیے بند ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں