سالمن یا ’ٹونہ‘ کون سی مچھلی صحت کے لیے مفید اور کون سی مضر ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

مچھلی صحت کے لیے کتنی اہم ہے۔ مچھلی غذائیت سے بھرپور ہوتی ہے، ان میں بنیادی غذائی اجزاء ہوتے ہیں جس میں اومیگا -3 فیٹی ایسڈ ، اعلی معیار کے پروٹین اور مختلف قسم کے وٹامن اور معدنیات جیسے طبی خواص شامل ہیں۔

سمندری غذا عام متوازن غذا میں صحت مند آپشن تشکیل دے سکتی ہے۔ تاہم ماہرین کے مطابق ہر قسم کی مچھلی غذائی نقطہ نظر سے اچھی نہیں ہوتی۔

’نوراسٹ ڈاٹ کام‘ میں دل کی بیماری کی ماہر مشیل روتھسٹین کا کہنا ہے کہ جب ان کی فوڈ فائل کی بات آتی ہے تو مچھلی برابر نہیں ہوتی ہے، لہذا کچھ اقسام کا انتخاب آپ کی صحت کے لیے زیادہ فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔

ماہرین کے مطابق نیچے دی گئی فہرست ہماری صحت کے لیے بہترین اور بدترین مچھلی کو ظاہر کرتی ہے۔

سالمن

ہماری صحت کے لیے بہترین مچھلی سالمن ہے۔ ماہرین صحت کے حوالے سے اس مچھلی کو تجویز کرتے ہیں۔

سالمن صحت مند مچھلی کے بہترین اختیارات میں سے ایک ہے۔ اس میں اومیگا -3 - چربی کی کم ترین شرح ہوتی ہےجو قلبی صحت اور دماغ کی صحت کو بہتر بنانے میں مدد کرتی ہے۔ اس میں پروٹین کی وافر مقدار پائی جاتی ہے۔

صدف

صدف بھی اومیگا -3 سے مالا مال ہوتےہیں۔ان میں آئرن کی بھی وافرمقدار ہوتی ہے۔ یہ ماحول کے لیے بھی مفید ہے لیکن ایک انتباہ ہےکہ اسے کچا نہیں کھانا چاہیے۔

سارڈین

غذائیت کے ماہرین نے ای پی اے ، ڈی ایچ اے اور اومیگا -3 فیٹی ایسڈ سے مالا مال سارڈائنزکی بھی تجویز پیش کی ہے۔ اینٹی انفلامیٹری اور دل کی صحت سے متعلق فوائد فراہم کرتے ہیں۔

ہال بٹ

اس کے متوازی طور پر ہالبوٹ کی موٹائی ایک اچھے آپشن ہے کیونکہ یہ سیلینیم سے مالا مال ہے۔ یہ دل کے لیے فائدہ مند اینٹی آکسیڈینٹ ہے اور سوزش اور آکسیڈیٹیو تناؤ کو کم کرتا ہے۔

وٹامن ’بی 6‘ کا ایک اچھا ذریعہ جو استثنیٰ اعصاب اور جگر کے لیے فائدہ مند ہے۔

لال مچھلی

سرخ جوہر کی موٹائی بھی ایک مفید آپشن ہے کیونکہ یہ پوٹاشیم سے مالا مال ایک ذریعہ ہے، جو بلڈ پریشر اور شریان صحت کو بہتر بنانے میں مدد کرتا ہے اور پروٹین اور وٹامن بی کا ایک اچھا ذریعہ ہے۔

مچھلی کی بدترین اقسام

نعل مچھلی

ماہرین نے متنبہ کیا کہ واحد کی نعل میں آلودگیوں کا زیادہ خطرہ ہوتا ہے اور یہ دل کے بہت سے صحت مند غذائی اجزاء جیسے اومیگا -3 پوٹاشیم اور میگنیشیم میں بھی کم ہے۔

اس میں پوٹاشیم کے مقابلے میں سوڈیم کی ایک اعلی فیصد بھی ہے جس سے بلڈ پریشر کی سطح میں اضافہ ہوسکتا ہے۔

کاشت شدہ تلپیا

دوسری مچھلی جن سے آپ دور رہنا چاہتے ہیں ان کی کاشت تلپیا ہے ، جس میں آلودگی ،اینٹی بائیوٹکس اور اومیگا -6 فیٹی ایسڈ کی اعلی سطح ہوتی ہے جو انفیکشن کا سبب بن سکتی ہے، آپ کے صحت کے اہداف کے حصول میں منفی اثرات کا باعث سکتی ہے۔

اور ینج فش

اس مچھلی کو سرخ کھردری مچھلی کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ اورینج فش کھردری ہوتی ہے جس کی عمر لمبی عمر ہوتی ہے اس کا مطلب یہ ہے کہ یہ اکثر زندگی بھر بہت آلودا پانی میں رہتی ہے جس میں پارا کی بڑی مقدار پائی جاتی ہے۔

شارک

ماہرین کا کہنا ہے کہ شارک آپ کی صحت یا ماحول کے لئے کارآمد نہیں ہو سکتی۔

شارک مچھلی میں پارےکی بڑی مقدار ہوتی ہے، جو اعصاب کے لیے ایک زہریلا مادہ ہے۔ حاملہ خواتین اور بچوں کو اس سے پوری طرح گریز کیا جانا چاہیئے۔

ٹونا

ٹونا مچھلی متنازعہ ہوسکتی ہے ، کیونکہ یہ وٹامن بی 6 اور بی 12 کا ایک بھرپور ذریعہ ہے جو صحت کے بعض مسائل پیدا کرنے کے ساتھ ہارمونز اور اعصاب کو مضبوط کرنے میں مدد دیتی ہے۔

تاہم ٹونا اومیگا -3 اینٹی انفلامیٹری فیٹی ایسڈ کا ایک بہت بڑا ذریعہ نہیں اور اس میں پارا کی اعلی سطح بھی ہوتی ہے، لہذا اگر آپ اس سے لطف اندوز ہوتے ہیں تو آپ کو اسے ہفتے میں ایک یا دو بار محدود مقدارمیں استعمال کرنا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں