ریاض کی ادبی نمائش میں زمانہ جاھلیت کے شاعروں سے ملنے کی بھی سہولت

نمائش میں آپ کا استقبال امرؤ القیس، الفرزدق ، الخنساء اور عنترہ بن شداد کے مجسمے کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کیا آپ نے زمانہ جاہلیت کے شاعروں سے ملنے کا تصور کیا؟ یا ان کے سامنے کھڑے ہونے کے بارے میں کبھی سوچا ہے؟ یہ بات تو واضح ہے کہ ان کرداروں کو دوبارہ پیدا نہیں کیا جا سکتا۔ تاہم یہ خیال ناممکن نہیں ہے کہ آپ ان جیسے رنگ و روپ اور شکل اور ساخت والے مجسموں کے ساتھ وقت گزار سکتے ہیں۔

ریاض میں ادبی نمائش نے بھی آنے والوں کو ایسا ہی موقع فراہم کرنے کا بندوبست کیا ہے۔ جیسے ہی آپ دارالحکومت ریاض میں نمائش کے مقام کنگ عبدالعزیز پبلک لائبریری میں داخل ہوں گے آپ کا استقبال امرؤ القیس، الفرزدق اور الخنساء اور عنترہ بن شاداد کریں گے۔ مشہور عربی خواتین مبصرین کی آوازیں پوری نمائش میں ساتھ ساتھ سنائی دیتی رہیں گی۔

زمانہ جاھلیت کے شعرا کے مجسمے
زمانہ جاھلیت کے شعرا کے مجسمے

کہانیوں اور شاعری کے مخطوطات، مجموعوں اور روایتی نظموں کے مجموعے کے علاوہ سعودی خطاطوں کی طرف سے لکھی گئی شاعرانہ پینٹنگز کی نمائش بھی موجود ہے۔ نمائش میں لائبریری کے ہولڈنگز سے پانچ صدی قدیم نایاب شاعری کے نسخوں کا انتخاب پیش کیا گیا ہے۔ نمائش میں آٹھویں صدی اور تیرہویں صدی ہجری کی کتابیں بھی موجود ہیں۔

دیوان متنبی، دیوان ابن المقرب العیونی کے مجموعے، سبع معلقات کا نادر نسخہ اور سبع معلقات کی تشریح کرنے والا مخطوطہ بھی نمائش میں رکھا گیا ہے۔ شاعر لبید بن ربیعہ کی شرح معلقہ بھی موجود ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ نمائش نے نوجوان ذہنوں کو شاعری میں پروان چڑھانے کے موقع کو بھی نظرانداز نہیں کیا کیونکہ اس نے بچوں کو شاعری سکھانے کے لیے ایک خاص گوشہ مخصوص کیا ہے ۔ اس کارنر میں بچوں کی عمر کے لیے موزوں ادبی اشیا رکھی گئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں