لیال الاختیار کے ساتھ کھڑے ہیں: العربیہ، لبنان میں خاتون اینکر کو نوٹس ملنے پر رد عمل

لیال کے ساتھ جو ہوا وہ صحافتی اقدار کو نشانہ بنانے کے مترادف ہے، ہم صحافیوں کے ساتھ ہیں: بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

العربیہ چینل کی خاتون اینکر لیال الاختیار کے خلاف حالیہ قانونی کارروائی کے حوالے سے چینل نے کہا ہے کہ وہ اپنی اینکر لیال الاختیار کے ساتھ کھڑا ہے۔ العربیہ پیشہ ورانہ امور انجام دینے میں تمام صحافیوں کے ساتھ ہے۔

العربیہ نے زور دیا ہے کہ لیال الاختیار کے ساتھی آج جو کچھ پیش آرہا ہے وہ صحافت اور اس کی اقدار کے ساتھ ساتھ پیشہ ورانہ میڈیا اپروچ، پیشہ ورانہ اور متوازن خبروں کی کوریج کو نشانہ بنانے کے مترادف ہے۔ یہ صحافیوں کو ڈرانے اور دھمکانے کی کوشش ہے تاکہ ان کو متوازن مکالمے سے روکا جا سکے۔

العربیہ کا لوگو
العربیہ کا لوگو

العربیہ نیوز نیٹ ورک جامع اور پیشہ ورانہ خبروں کی کوریج فراہم کرنے کے اپنے عزم کی تجدید کرتا ہے۔ العربیہ نیوز نیٹ ورک تمام فریقوں اور ذرائع سے آنے والی خبروں کی ساکھ اور معروضیت کی اعلی درجہ کی تحقیق کرتا ہے۔

یاد رہے العربیہ چینل کے ساتھی براڈکاسٹر لیال الاختیار کو لبنان میں ان کے خلاف ملٹری پبلک پراسیکیوشن کی جانب سے جاری کردہ سرچ اور انویسٹی گیشن وارنٹ موصول ہوئے۔ متعدد میڈیا پروفیشنلز نے اسرائیلی فوج کے ترجمان ادرائی اویچائی کا کا انٹرویو کرنے پر لیال الاختیار کے خلاف مقدمہ دائر کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں