نیتن یاہو نے حماس کے رہنماؤں کو قتل نہ کرنے کا عہد کیا ہے: معروف صحافی کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر اور امریکہ کے علاوہ قطر بھی حماس اور اسرائیل کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کے حوالے سے معاہدے کے لیے ہفتوں سے سرگرم رہے۔ ایک ایک باخبر ذریعے نے نئی معلومات کا انکشاف کیا۔ یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے بظاہر دوحہ میں موجود حماس کے رہنماؤں کو ختم نہ کرنے کا وعدہ کیا ہے۔

اس کی تصدیق مشہور فرانسیسی صحافی اور مصنف جارجس مالبرونوٹ کے ایک باخبر ذریعے نے کی ہے۔ انہوں نے یہ بات ’’ ایکس‘‘ پر دو پوسٹوں میں بتائی۔ ذرائع نے بتایا کہ قطر کو اسرائیل کی طرف سے یہ یقین دہانی ملی ہے کہ موساد دوحہ میں حماس کے سیاسی ونگ کے رہنماؤں کا قتل نہیں کرے گی۔ اسرائیل کو یہ یقین دہانی اس وقت فراہم کرنا پڑی جب دوحہ نے ہفتے قبل قیدیوں کے معاملہ میں اپنی ثالثی کا آغاز کیا تھا۔

انہوں نے یہ بھی نشاندہی کی کہ نیتن یاہو نے موساد کو حکم دیا تھا کہ وہ پہلے ہی اس طرح کے حل کے لیے تیاری کرے۔ ذریعہ کے مطابق قطر کے علاوہ بھی کافی مقامات میں اس پر عمل کیا جائے گا۔ لبنان اور ترکی جیسے دیگر مقامات پر بھی حماس کے رہنما موجود ہیں۔ غزہ کی پٹی پر 7 اکتوبر کو جنگ شروع ہونے کے بعد اسرائیل نے بارہا اس بات پر زور دیا ہے کہ اس کا مقصد حماس کو کچلنا اور اس کے رہنماؤں کو قتل کرنا بھی ہے۔

اسرائیل نے اس بات پر بھی زور دیا ہے کہ مختصر جنگ بندی اسے اپنے اہداف کے حصول سے نہیں روکے گی۔ خاص طور پر حماس کے سربراہوں کو ختم کرنے کے ہدف سے ۔ حماس کے رہنما اکثر قطر، لبنان اور ترکیہ کے درمیان موجود ہیں۔ تحریک حماس کے رہنما یحییٰ السنوار غزہ میں تعینات ہیں اور محمد ضیف بھی پٹی میں ہی ہیں اور عسکری ونگ کے ذمہ دار ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں