فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیلی نے بمباری کر کے غزہ میں تاریخی عمری مسجد شہید کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے جمعہ کے روز اسرائیلی فوج کی طرف سے تاریخی عمری مسجد کی مسماری پر شدید دکھ کا اظہا کیا ہے۔ حماس نے غزہ میں صدیوں سے قائم اس مسجد پر بمباری کرنے کو اسرائیل کے سنگین جرم سے تعبیر کیا ہے۔

دریں اثناء حماس کے زیر اثر میڈیا نے اس بمباری کے بعد عمری مسجد کی مسماری سے متعلق تصاو یر بھی جاری کی ہیں۔

تاہم برطانوی خبر رساں ادارے کے نمائندے کا کہنا ہے کہ وہ ابھی مسجد کی ہونے والی تباہی اور نقصان کی تصدیق کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہے۔ تاہم نمائندے نے یہ تسلیم کیا ہے کہ تصاویر میں جو مینار نظر آ رہے ہیں وہ اسی عمری مسجد کے ہیں۔

تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مسجد کی دیواریں گر گئی ہیں اور چھت کو کافی نقصان پہنچا ہے، اسی طرح پتھر کے بنے مینار کے نیچے بھی ایک بڑا شگاف بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

اس تاریخی مسجد کو بمباری سے مسمار کرنے کے بارے میں اسرائیلی فوجی ترجمان نے درخواست کے باوجود کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ واضح رہے غزہ میں عمری مسجد خلیفہ ثانی حضرت عمر فاروق رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے نام سے منسوب ایک قدیمی اور بڑی مسجد ہے۔

غزہ میں اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں اب تک 17000 سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں، ہر طرح کی عمارات بشمول گھر ، سکول ، مساجد اور ہسپتال مسلسل اسرائیلی بمباری کی زد پر ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں