ترکیہ میں آوارہ کتوں کا مسئلہ ایک بار پھر سامنے آگیا

چند روز قبل انقرہ میں ایک بچہ شدید زخمی ہوا۔ ترکیہ کے صدر سے فوری مداخلت کی ہدایت کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

چند روز قبل دارالحکومت انقرہ میں ایک بچے کے شدید زخمی ہونے کے بعد ترکیہ میں آوارہ کتوں کا مسئلہ پھر سے منظر عام پر آ گیا ہے۔ ترک صدر رجب طیب ایردوان نے اپنے خطاب میں اس واقعہ سے متعلق کہا کہ یہ دردناک حقیقت فوری مداخلت کی متقاضی ہے۔ کیا آوارہ کتے واقعی ملک کا مسئلہ ہیں؟

ترکیہ میں "آوارہ کتوں کا مسئلہ" پلیٹ فارم کے مطابق ملک میں آوارہ کتوں کی تعداد 10 ملین سے تجاوز کر چکی ہے۔ ہر سال اس وقت درجنوں افراد ہلاک اور شدید زخمی ہو جاتے ہیں جب یہ لوگ مرکزی سڑکوں پر ان سے بچنے کی کوشش کرتے ہیں۔

سیاسی، معاشی اور سماجی رائے عامہ کے جائزوں کا انعقاد کرنے والے ترکیہ کے ایک تحقیقی مرکز کے ڈائریکٹر نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ترکیہ میں آوارہ کتوں کی موجودگی ملک کے ایک حساس معاملے اور مسئلے کی نمائندگی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا جانوروں کے حقوق اور عوام کی حفاظت کے درمیان توازن قائم کرنا ضروری ہے۔

اپنے خاندان کے نام سے ایک تحقیقی کمپنی چلانے والے مرات غزیچی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ حکومت کو جانوروں کی تعداد کو کنٹرول کرنے کے لیے ایک جامع نس بندی اور کاسٹریشن پروگرام شروع کرنا چاہیے تاکہ یہ پروگرام آوارہ جانوروں کی تعداد کو کم کر سکے۔ جانوروں کے قدرتی ماحول کو نقصان پہنچائے بغیر ان کے حقوق کا تحفظ کرنا بھی ضروری ہے۔

غزیچی کے ڈائریکٹر نے مزید کہا کہ یہ حکومتی پروگرام آوارہ کتوں کے مسئلے کو کم کرنے کے لیے کافی نہیں ہے۔ معاشرے میں جانوروں کے بارے میں بیداری پیدا کرنے کے لیے سکولوں میں تعلیمی مہمات اور جانوروں کے حقوق کے حوالے سے اسباق کا انعقاد بھی ضروری ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ملک کی ریاستوں میں حکومت اور مقامی حکام کی شراکت سے آوارہ جانوروں کی دیکھ بھال کے مراکز اور پناہ گاہیں قائم کی جا سکتی ہیں۔ ان مراکز میں جانوروں کی صحت کی جانچ کی جا سکتی ہے۔ ان کو ویکسین لگائی جا سکتی ہے۔

چند روز قبل ترک صدر نے اپنے ملک میں آوارہ کتوں کے مسئلے پر خطاب کرتے ہوئے دارالحکومت انقرہ میں آوارہ کتوں کے حملے میں 9 سالہ بچے کے شدید زخمی ہونے کے بعد اس مسئلے کو حل کرنے کا کہا تھا۔

ایردوان نے صحافیوں کو بتایا کہ ہم آوارہ جانوروں کے بارے میں بڑھتی ہوئی شکایات سے آگاہ ہیں۔ ہم اس مسئلے کو اس طریقے سے حل کرنے کا وعدہ کرتے ہیں جو ہماری اقدار اور انسانی ورثے سے ہم آہنگ ہو۔

اگرچہ "آوارہ کتوں کا مسئلہ" پلیٹ فارم نے رواں سال 2023 میں آوارہ کتوں کے حملوں کے نتیجے میں ہونے والی اموات اور شدید زخمیوں کی تعداد کا اعلان نہیں کیا تھا لیکن اس نے گزشتہ سال اعلان کیا تھا کہ 2022 کے دوران آوارہ کتوں سے بچنے کے دوران 33 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ ان میں سے 13 ان کی موت ٹریفک حادثات میں ہوئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں