ریڈ سی کمپنی نے ’’ ٹرٹل بے‘‘ کالونی میں خود سے چلنے والی گاڑیوں کی سروس متعارف کرادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ریڈ سی انٹرنیشنل کمپنی نے بحیرہ احمر میں پائیدار نقل و حمل کے لیے اپنی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر ٹرٹل بے کے نام سے مشہور ملازمین کے رہائشی شہر میں دو خود سے چلنے والی گاڑیاں چلانے کا اعلان کردیا۔

کمپنی نے پراجیکٹ میں کام کرنے والی انسانی قوت کی صحت، حفاظت اور خوشی کو یقینی بنانے کے طریقے فراہم کرنے کے لیے یہ اقدام کیا۔ ملازمین کو ایک اعلیٰ معیار اور جدید طرز کی زندگی فراہم کرنے کے لیے بحیرہ احمر جیسی منزل میں ملازموں کے لیے شہر تیار کیا گیا ہے۔

پبلک انویسٹمنٹ فنڈ سے منسلک ریڈ سی انٹرنیشنل کمپنی میں ٹرانسپورٹ ڈیپارٹمنٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر انجینئر احمد الاخرس نے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کے ساتھ اپنے انٹرویو میں کہا کہ کمپنی ’’ٹرٹل بے‘‘ میں "اے وی" کے نام سے مشہور خود مختار گاڑیاں استعمال کر رہی ہے۔ یہ سروس بحیرہ احمر کے مقام پر ہمارے ساتھیوں کے لیے ہماری وسیع تر نقل و حمل کی حکمت عملی کے اقدامات سے ہم آہنگ ہے۔

الاخرس نے مزید کہا کہ خود سے چلنے والی گاڑیوں کو چلانے کے لیے آزمائشی مرحلہ مکمل ہو چکا ہے۔ اس سال 17 دسمبر کو سروس شروع کی گئی۔ یہ گاڑیاں ضرورت کے وقت استعمال کے لیے پلیٹ فارم پر موجود ہوتی ہیں اور وہیل چیئر کی طرح معذور افراد کے لیے بھی قابل رسائی ہیں۔

انجینئر الاخرس نے نشاندہی کی کہ ان گاڑیوں میں سے ہر ایک میں تقریباً 12 افراد سوار ہوسکتے ہیں۔ خود سے چلنے والی گاڑی کی زیادہ سے زیادہ رفتار 20 کلومیٹر فی گھنٹہ تک پہنچ جاتی ہے۔

ریڈ سی انٹرنیشنل کمپنی کے محکمہ ٹرانسپورٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے مزید کہا کہ "اے وی" کے نام سے جانی جانے والی سیلف ڈرائیو گاڑیاں فی الحال 13 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلتی ہیں۔ "ٹرٹل بے" سائٹ پر زیادہ سے زیادہ رفتار 15 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ سیلف ڈرائیونگ وہیکل سروس ملازمین کے رہائشی شہر ’’ ٹرٹل بے‘‘ میں ملازمین اور زائرین دونوں کے لیے دستیاب ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں