سال 2023ء کے دوران مصنوعی ذہانت کے شعبے میں 7 انقلاب آفریں ایجادات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
7 منٹس read

امریکی "ٹائم" میگزین نےمختلف شعبوں میں ہر سال کے آخر میں بہترین 200 ایجادات اور اختراعات کا انتخاب کرکے انہیں شائع کرتا ہے جن میں مصنوعی ذہانت، الیکٹرانک ایپلی کیشنز، گھریلو آلات، ذاتی نگہداشت کے اوزار، کھانے پینے کی اشیاء اور دیگر شامل ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے’ٹائم‘ میں شائع ہونے والی مصنوعی ذہانت کے شعبے میں روزمرہ کی زندگی کو بہتر بنانے یا تحفظ اور فلاح و بہبود کے زیادہ سے زیادہ احساس کے حصول سے متعلق کئی اہم ترین ایجادات کا انتخاب کیا ہے۔

مصنوعی ذہانت کے ساتھ فوٹوشاپ
مصنوعی ذہانت کے ساتھ فوٹوشاپ

1. مصنوعی ذہانت کے ساتھ فوٹوشاپ

ایڈوب نے ٹیکنالوجی کو دنیا کے سب سے مشہور امیج ایڈیٹر فوٹوشاپ میں ضم کر کے لاکھوں لوگوں کے ہاتھ میں طاقتور ’اے آئی‘ صلاحیتیں ڈال دی ہیں۔ ’اے آئی‘ سے چلنے والے امیج بلڈر فائر فلائی کے ذریعے تقویت یافتہ فوٹوشاپ میں اب یہ صلاحیتیں شامل ہیں کہ تصوراتی مواد کو بغیر کسی رکاوٹ کے مرضی کی تصویر میں ڈھلانے میں مدد مل سکتی ہے۔

یہ آسان الفاظ سے متن لکھ کر موجودہ تصویر میں کچھ شامل کرنے یا حذف کرنے کی صلاحیت بھی فراہم کرتا ہے۔اس میں تکنیکی مہارت کی اب ضرورت نہیں ہے۔ ’ایڈوب‘ نے کہا کہ نئی ایجادات "گاہکوں کو اپنے وژن کو اتنی تیزی سے اپ ڈیٹ کرنے کے قابل بناتی ہیں جتنا وہ تصور کرتے ہیں"۔

قیمتی سامان کی جعلسازی کا پتہ لگانا
قیمتی سامان کی جعلسازی کا پتہ لگانا

2. مصنوعی ذہانت سے جعلی سازی کی نشاندہی ممکن

جعلی اشیا کے ملٹی ٹریلین ڈالر کے مسئلے کا ایک حل اتنا ہی آسان ہو سکتا ہے جتنا کہ فون کے کیمرے کو گھڑی یا ہینڈ بیگ کی طرف اشارہ کرنا۔ سمارٹ سافٹ ویئر کو ان کی صداقت کا تعین کرنے دینا ہے۔ فیچر پرنٹ ایک بصری AI ٹیکنالوجی ہے جو سب سے پہلے فزیکل آئٹمز کی باریک سطح کی تفصیلات کو "دیکھتی" ہے اور انہیں منفرد ریاضیاتی شناختوں میں "فنگر پرنٹس" بناتا ہے۔ پھر آپ بٹن کے کلک سے اس بات کا تعین کر سکتے ہیں کہ آیا شے جعلی ہے یا اصلی ہے۔

جی بی ٹی چیٹ بوٹ
جی بی ٹی چیٹ بوٹ

3. GPT-4 چیٹ بوٹ

مارچ میں ریلیز ہونے کے آٹھ ماہ بعد OpenAI کا GPT-4 چیٹ بوٹ چلانے کے لیے سب سے طاقتور،عوامی طور پر قابل رسائی AI ماڈل ہے۔

جبکہ اس کے پیشرو، ChatGPT نے بار کا امتحان دینے والے صرف 10 فی صد طلباء سے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ GPT-4 نے ان میں سے 90 فی صد کو پیچھے چھوڑ دیا۔ وہ زبانی استدلال میں مہارت رکھتا ہے۔ پیچیدہ تصورات کو آسان زبان میں بیان کر سکتا ہے اور یہاں تک کہ یہ بھی بتا سکتا ہے کہ مذاق کیوں مضحکہ خیز ہے؟۔

ستمبر میں OpenAI نے آواز کے ذریعے ماڈل کے ساتھ بات چیت کرنے اور تصاویر کو بطور ان پٹ استعمال کرنے کی صلاحیتوں کو متعارف کرانا شروع کیا۔ اپ ڈیٹ GPT-4V کا تجربہ Be My Eyes کے ساتھ کیا گیا۔ جو ایک ایسی تنظیم ہے جو بصارت سے محروم لوگوں کے لیے ایسے اوزار تیار کرتی ہے جو قدرتی زبان میں تصویری مواد کو زبانی طور پر بیان کر سکتے ہیں۔

تخیل کو حقیقت میں بدل دیں۔
تخیل کو حقیقت میں بدل دیں۔

4. تخیل کو حقیقت میں بدلنا

چیٹ جی پی ٹی پروگرام کے بعد دنیا میں مصنوعی ذہانت میں معیاری تبدیلی آئی۔ OpenAI کو امید ہے کہ DALL-E 3 کا نیا اور بہتر ورژن مصنوعی ذہانت کے الگورتھم پر مبنی تصاویر تیار کرنے میں مدد گار ہوگا اور یہ صنعت میں دھوم مچا دے گا۔ OpenAI کمپنی جس نے DALL-E 3 کی ایجاد کی تھی اس کا کہنا ہے کہ پچھلے امیج جنریٹرز کو بہترین نتائج حاصل کرنے کے لیے ایک نئی تکنیکی زبان سیکھنے کی ضرورت ہوتی ہے، جس میں بیضوی اور نمبروں کے ساتھ سٹرنگ جوڑنا بھی شامل ہے۔ اسے DALL-E 3 اور ChatGPT کے ساتھ بنڈل کیا جا سکتا ہے۔ صارفین چیٹ کمانڈز درج کر سکتے ہیں اور فوری طور پر ایک تصویر حاصل کر سکتے ہیں اور من پسند تصویر حاصل کرسکتے ہیں۔

پوری فیچر فلموں میں ترمیم کرنا
پوری فیچر فلموں میں ترمیم کرنا

5. مصنوعی ذہانت کے ساتھ فیچر فلمیں

’آسکر ایوریتھنگ ایوری ویئر آل ایٹ ونس‘ کمپنی جس نے رن وے کے Gen-2 سافٹ ویئر کے ساتھ شاندار گرافکس تیار کرنے کے لیے بصری اثرات کے ٹولز کا استعمال کیا۔ یہ ایک اسٹارٹ اپ گوگل کی حمایت یافتہ سروس ہے۔ Gen-2 سافٹ ویئر کا نیا ورژن کسی کو بھی متن، تصویر یا دیگر ویڈیو کمانڈز جاری کرکے پوری ویڈیوز بنانے کی اجازت دیتا ہے۔ رن وے کے مطابق نئی ٹیکنالوجی کا موازنہ 200 سال قبل کیمرے کی ایجاد سے کیا جا سکتا ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ "AI ایک نئی قسم کا کیمرہ بنتا جا رہا ہے، جو کہانی سنانے کو ہمیشہ کے لیے نئی شکل دے گا اور مکمل طور پر تیار کردہ فیچر فلموں کی طرف لے جائے گا"۔

آسمان میں آنکھیں
آسمان میں آنکھیں

6. آنکھیں آسمان میں

ڈرون اتنے ہی تباہ کن ہو سکتے ہیں جتنے وہ مفید ہیں۔ ڈیڈرون کا سٹی وائیڈ ڈرون ڈیٹیکشن پروڈکٹ کسی بھی جغرافیائی علاقے میں ایک ورچوئل حفاظتی ڈھال بناتا ہے۔ اگر کوئی ڈرون مقررہ فضائی حدود میں داخل ہوتا ہے تو قانون نافذ کرنے والوں کو سیکنڈوں میں الرٹ کرتا ہے۔ ڈیڈرون سسٹم ڈرونز سے سگنلز کے ایک خاص مرکب کو ٹریک کرتا ہے۔ یہ ریڈیو فریکوئنسی، ADS-B ڈیٹا جو ہوائی جہازوں میں استعمال ہوتا ہے دراندازی کے مقام کی نشاندہی کرنے کے لیے RemoteID سگنلز کو کنٹرول کرتا ہے۔ بہت سے صارفین نے نئے نظام کا استعمال کیا ہے، جو بنیادی ڈھانچے کی حفاظت، پولیس فورسز کی مدد یا غیر متعینہ تعداد میں ہوائی اڈوں کی حفاظت میں کارگر ثابت ہوا ہے۔

7. جنگلات میں آتش زدی سے بچاؤ

جنگل کی آگ کو پھیلنے سے پہلے ان کا پتہ لگانا ایک چیلنج ہے جو اب پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے۔ UC سان ڈیاگو کا پبلک سیفٹی پروگرام الرٹ کیلیفورنیا مدد کے لیے مصنوعی ذہانت کا استعمال کر رہا ہے۔

Cal Fire کے ساتھ کام کرتے ہوئے پروگرام نے ریاست بھر کے جنگلات میں رکھے گئے 1,050 سے زیادہ کیمروں کے نیٹ ورک کے ذریعے دھوئیں اور آگ کے دیگر ابتدائی اشارے کا پتہ لگانے کے لیے مصنوعی ذہانت کو تربیت دی۔ جب سسٹم کسی چیز کا پتہ لگاتا ہے تو یہ ٹیکسٹ میسج کے ذریعے مقامی فائر ڈیپارٹمنٹ کو آگاہ کرتا ہے۔

اس سسٹم نے اپنے استعمال کے پہلے دو مہینوں کے دوران کسی بھی ہنگامی کال کے موصول ہونے سے پہلے 77 مقامات پرآگ کی درست نشاندہی بھی کی، اس طرح ان کے پھیلاؤ سے بچایا اور آگ پھیلنے سے پہلے ان پر قابو پایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں