مجھے فٹ بال پسند، رونالڈو جیسا بننا چاہتا: ٹانگ سے محروم فلسطینی بچے کا خواب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں ایک بے گھر فلسطینی بچے نے گھر پر اسرائیلی میزائل گرنے کی ہولناک تفصیلات بیان کی ہے۔ بچے نے بتایا کہ جس وقت میزائل گرا اس وقت خاندان کے افراد گھر میں موجود تھے۔ بچے محمد کامل الغلیان نے کہا ہم سکول میں تھے اور میں نے اپنے والد کو کلاس روم کی کھڑکی سے اس وقت دیکھا جب وہ گلی میں تھے۔ میں ان کا استقبال کرنے نکلا۔ جیسے ہی ہم واپس گھر آئے، ایک میزائل ہمارے اوپر آ گرا۔

بچے نے بتایا کہ اس کا باپ اور بھائی اسرائیلی بمباری میں مارے گئے۔ زخمی ہونے کے بعد میری ٹانگ کاٹ دی گئی ہے۔ محمد الکامل نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا میری ٹانگوں اور پیٹ میں میزائل کے ٹکڑے موجود ہیں۔ فلسطینی بچے نے کہا میرا خواب فٹ بال کھلاڑی بننا اور ریال میڈرڈ کو سپورٹ کرنا تھا۔

"میں رونالڈو جیسا بننا چاہتا ہوں"

محمد الکامل نے یہ بھی کہا کہ میں رونالڈو سے محبت کرتا ہوں اور میں ان جیسا بننا چاہتا ہوں۔ الکامل نے بیرون ملک علاج

کرانے اور مصنوعی اعضا لگوانے کی خواہش کا اظہار کیا۔

واضح رہے یہ کہانی ان ہزاروں المناک کہانیوں میں سے ایک ہے جس کا تجربہ غزہ کی پٹی سے حالیہ اسرائیلی جارحیت میں ہوا ہے۔ بدھ کے روز 82 ویں دن بھی اسرائیلی کی جانب سے فلسطینیوں کی نسل کشی جاری رہی۔ اسرائیل نے کہا ہے کہ یہ جنگ اگلے کئی ماہ تک جاری رہ سکتی ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم نے متعدد مرتبہ حماس کے مکمل خاتمے تک بربریت جاری رکھنے کا کہا ہے۔ اب تک اس لڑائی میں 21110 فلسطینی شہید اور 54243 زخمی ہوچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں