العلامیں مقامی سنگتروں اورلیمووں کاتیسرامیلہ،مٹھاس اور کھٹاس رنگارنگ لبادوں میں موجود

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں نئے جدید شہر نیوم سے جڑے العلا میں 800 ہیکٹر کے وسیع قطعہ اراضی پر اگائے گئے سنگتروں اور لیمووں کی رنگا رنگ پیداوار نمائش کے مرحلے تک پہنچ گئی ہے۔ العلا میں سنگترے کے 200000 پیڑ لگائے گئے تھے۔ جو اب پھل دے رہے ہیں۔

شاہی کمیشن برائے العلا نے ان تازہ ، خوشبو دار اور ذائقے سے مالا مال سنگتروں اور لیمووں کی نمائش اور تیسرے میلے کا اہتمام جمعہ کے روز سے شروع کر رکھا ہے۔

پھل پکنے لگنے پر اس میلے کا اہتمام کیا جاتا ہے اور مختلف اقسام کے ان میٹھے ، رسیلے اور کھٹے کھٹے سنگتروں اور لیمووں کی نمائش شروع کر دی جاتی ہے۔ کہ یہ خالصتاً العلا کے فارموں سے آٓئے ہوتے ہیں۔

یہ میلہ 5 اور 6 جنوری کے بعد اب 12 اور 13 جوری کے ویک اینڈ پر مٹھاس کے اور ذائقے کی رنگا رنگیوں کے ساتھ رعنائیاں بکھیر کر شائقین کواپنی طرف متوجہ کرے گا۔

مقامی کسان اور باغبان اپنی محنت سے اگائے گئے ان سنگتروں کے ساتھ خوشی خوشی میلے میں آتے ہیں۔ کہ ان کی محنت رنگ لائی اور اس کی رنگا رنگی سبھوں کو میلے میں کھینچ لائی۔

دوسری طرف یہ سعودی عرب میں جاری ویژن 2030 کی بھی عمل داری کا اظہار ہے۔ جس کا رائل کیمشن یوں اہتمام کرتا ہے۔ توجہ اور مسلسل محنت کے نتیجہے میں کھجوروں کے بعد سنگتروں کی پیداوار نمایاں حیثیت اختیار کرتی جا رہی ہے۔

شائقین کے لیے بھی زراعت کا یہ پہلو خوب دلچسپی اور کشش کا ذریعہ بن رہا ہے۔ یہ مستقبل میں زرعی شعبے کی ترقی کی بھی نشاندہی ہے۔

العلا کے اس میلے میں لیموں کی کچھ نمایاں اقسام میں سنگترے۔میٹھی نارنگییاں، مینڈارن اور کلیمینٹائنز شامل ہیں۔ یہ تہوار مقامی پروڈیوسروں کے لیے ایک متحرک منڈی کا کام کررہا ہے، اس دوران سالانہ تقریباً 15,000 ٹن پیداوار فروخت ہو جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں