زکر برگ نے گائے پالنے کی شروعات کر دیں، ڈرائی فروٹ اور بئیر گائے کی خوراک ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

انسانی نسل کشی کی حمایت میں سرگرم طاقتوروں کی دنیا میں فیس بک کے شریک بانی مارک زکر برگ نے بہترین نسل کی گائے کو بڑے اہتمام سے پالنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اس کا لذیذ گوشت مزے لے لے کر کھا سکیں۔

گائے جسے بھارت کے ہندووں میں ماں کا درجہ دیتے ہوئے ' گاو ماتا ' کہا جاتا ہے ، گائے کے ذبیحہ کو اپنے ہندوانہ اعتقاد میں درست نہیں سمجھتے ۔ ان کے نزدیک گائے کھانے کا نہیں پوجنے کا جانور ہے۔ لیکن مارک زکر برگ نے اسی گائے کی اعلیٰ اور لذیذ نسل کو مزے لے لے کر کھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ دنیا کے معروف ارب پتیوں میں سے ایک مارک زکر برگ گائے کی اس نسل کو بطور خاص کھانے کا ارادہ رکھتے ہیں، اس لیے انہوں نے اسے کی پرورش میں میکادامیا کی خوراک اور بئیر کو پانی کے طور پر شامل کا ہے۔

جاپان میں کوبے کے بیل کے گوشت کی روایت کے بعد یہ مارک زکر برگ ہوں گے جو گائے کو اہتمام سے پالیں اور پھر کھالیں گے۔ جاپان میں کوبے کے گوشت کے پارچے بہت ہی مہنگے فروخت ہونے کی روایت ہے۔

انسٹاگرام پر مارک زکربرگ کے ذریعہ شیئر کردہ گوشت کے ایک ٹکڑے کی تصویر۔ (انسٹاگرام)
انسٹاگرام پر مارک زکربرگ کے ذریعہ شیئر کردہ گوشت کے ایک ٹکڑے کی تصویر۔ (انسٹاگرام)

مارک زکر برگ نے گائے پالنے کا یہ سلسلہ شروع کر دیا ہے۔ تاکہ دنیا میں گائے کے بہترین معیار کے گوشت کی تیاری کی شروعات کر سکیں۔

اس سلسلے مارک زکر برگ نے انگس اور واگیو دونوں قسم کے گائے پالنے کی شروعات کی ہیں۔ پہلی قسم کی گائے کا گوشت بہت طاقت والا جبکہ دوسری قسم کی گائے کا گوشت ذائقے میں بہترین سمجھا جاتا ہے۔ اس گوشت کو زکر برگ نے جس طرح انسٹا گرام پر دکھایا ہے اس سے لگتا ہے وہ گائے کے اس گوشت کی پیداوار کو کاروباری طور پر بھی فروخت کرنےکا سوچ سکتے ہیں۔

اس گائے کے گوشت کو مزے لے لے کر کھانے کے لیے زکر برگ اس کی پرورش آسٹریلیا کی سوغات میکا دامیا کے خشک میوے کے علاوہ شراب کی قسم ' بئیر' سے کرنا چاہتے ہیں۔

مارک زکربرگ کی بیٹی انسٹاگرام پر شیئر کی گئی تصویر میں درخت لگا رہی ہے۔ (انسٹاگرام)
مارک زکربرگ کی بیٹی انسٹاگرام پر شیئر کی گئی تصویر میں درخت لگا رہی ہے۔ (انسٹاگرام)

اندازہ ہے کہ ایک گائے پر سالانہ اخراجات 5000 پاؤند سے 10000 پاؤنڈ تک آئیں گے۔ تاہم زکر برگ کا سوشل میڈیا پر اپنی ایک پوسٹ میں کہنا ہے 'ابھی ہم اپنے اسے ( گاؤ کھاجا ) کے سفر کے آغاز میں ہیں۔ '

واضح رہے گائے بھینسیں پالنے کو یورپ میں آلودگی پھیلانےکا ذریعہ سمجھا جاتا ہے۔ کہ 60 فیصد گرین ہاؤسز میں بڑا کردار انہی کھانے سے متعلق آئٹمز کا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں