مکہ: دنیا کا بلند ترین معلق جائے نماز گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل

بلند ترین جائے نماز جبل عمر ہوٹل کے دو ٹاورز کو جوڑنے والے پل کے دائرے میں آتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے شہر مکہ میں دنیا کے بلند ترین معلق جائے نماز کو گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

آن لائن نیوز ویب پورٹل ’’سبق‘‘ کے مطابق پانچ سو پچاس مربع میٹر کے رقبے پر قائم اس منفرد جائے نماز پر 520 افراد بیک وقت نماز ادا کر سکتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق معلق مصلیٰ کی ایک خوبی یہ ہے کہ فجر کے بعد نمازی یہاں سے مکہ مکرمہ شہر پر طلوع ہوتے سورج کا منظر خاص روحانی ماحول میں دیکھ سکتے ہیں۔ یہاں سے المسجد الحرام، خانہ کعبہ اور مقدس مقامات صاف نظر آتے ہیں۔

یہ مصلیٰ المسجد الحرام کے سامنے جبل عمر ہوٹل کی بالائی منزلوں میں شامل ہے۔ مصلیٰ جبل عمر ہوٹل کے دو ٹاورز کو جوڑنے والے پل کے دائرے میں آتا ہے۔ بلندی پر واقع یہ جائے نماز سطح سمندر سے 483 میٹر کی اونچائی پر واقع ہے۔ یہ داخلی راستے سے 179 میٹر اونچا ہے۔

معلق مصلیٰ کا ڈیزائن قدیم عرب ڈیزائن اور عصر حاضر کے فن تعمیر کا خوبصورت امتزاج ہے۔ عربی رسم الخط کی تحریروں نے اس کے وقار اور حسن کو دوبالا کردیا ہے۔ اسمائے حسنی خوبصورت رسم الخط میں تحریر ہیں جو عظیم اسلامی ورثے کا پتہ دے رہے ہیں۔

جبل عمر ڈیولپمنٹ کمپنی کے ایگزیکٹیو چیئرمین خالد العمودی کا کہنا ہے کہ’گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں معلق مصلیٰ کے اندراج پر خوشی ہے۔‘

’یہ اس بات کا ثبوت بھی ہے کہ ہم زائرین کو منفرد تجربات سے متعارف کرانے کا جو عہد کیے ہوئے ہیں اس پر پورا اتر رہے ہیں۔‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں