خواتین کی صحت کے لیے 40 سال کے بعد انتہائی مفید 5 سپر فوڈز

بعض غذائی اجزاء بصارت، ہڈیوں کی صحت، دماغ، دل اور جلد کے بہتر افعال کے لیے ضروری ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عمر کی چالیس بہاریں دیکھنے والی خواتین کے لیے بعض غذائی اجزاء کھانے سے عام طور پر صحت کے کئی مسائل سے نمٹنے میں مدد ملتی ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق، ماہرین نے چالیس سال کی عمر کی خواتین کو ہڈیوں کو مضبوط بنانے، جلد، دل اور جلد کو بہتر بنانے ،دماغی صحت اور قدرتی قوت مدافعت میں اضافے کے لیے درج ذیل غذائیں کھانے کا مشورہ دیا ہے:

1.ہرے پتوں والی سبزیاں

پتوں والی سبزیاں وٹامن اے، کے، اور سی جیسے غذائی اجزاء کے ساتھ ساتھ فائبر اور فولاد سے بھری ہوتی ہیں۔ یہ آنکھوں اور ہڈیوں کی صحت کے علاوہ مجموعی صحت کو فروغ دینے کے لیے بہترین ہیں۔

چکن پروٹین کا ایک اچھا ذریعہ ہے
چکن پروٹین کا ایک اچھا ذریعہ ہے

2. پروٹین

پروٹین پٹھوں کی تعمیر اور انہیں برقرار رکھنے کے لئے ضروری ہے، یہ آپ کے میٹابولزم کو مضبوط رکھنے میں مدد کرتی ہے اور ہڈیوں کی صحت کے لیے ضروری ہے۔

صحت بخش ، کم کیلوریز والی پروٹین کے لیے آپ مرغی کے گوشت، مچھلی، پھلیاں، دال اور ٹوفو جیسے ذرائع کا انتخاب کر سکتے ہیں۔

3. بیریاں

بیریاں اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور ایک مزیدار پھل ہے جو خلیوں کو نقصان سے بچانے اور سوزش کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے، یہ فائبر اور وٹامنز کا ایک اچھا ذریعہ بھی ہیں۔آپ بلیو بیری، بلیک بیری یا اسٹرابیری کھا سکتے ہیں۔

میگنیشیم گری دار میوے اور بیجوں میں پایا جاتا ہے
میگنیشیم گری دار میوے اور بیجوں میں پایا جاتا ہے

4۔ خشک میوے اور بیج

گری دار میوے اور بیج صحت مند چکنائی، پروٹین، فائبر اور مختلف قسم کے وٹامنز اور معدنیات فراہم کرتے ہیں۔ یہ بھوک مٹانے اور توانائی کا ایک بڑا ذریعہ ہے۔ اس کے لیے، اچھے اختیارات میں بادام، اخروٹ، چیا کے بیج اور سورج مکھی کے بیج شامل کریں۔

5. چربی والی مچھلی

سالمن، ٹونا، سارڈینز اور میکریل اومیگا تھری فیٹی ایسڈ سے بھرپور مچھلیاں ہیں، جو دل کی صحت، دماغی افعال اور سوزش کو کم کرنے کے لیے ضروری ہیں۔ چربی والی مچھلی کو ہفتے میں کم از کم دو بار خوراک میں شامل کرنا چاہیے۔

صحت مند زندگی گزارنے کے لیے،ماہرین بیان کرتے ہیں، کہ کلید یہ ہے کہ ایک صحت مند، متوازن کھانے کا انداز اپنایا جائے جس سے لطف اندوز ہوا جائے اور وقت کے ساتھ اسے برقرار رکھا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں