آپ کی جلد کو پانی کی ضرورت ہے؟کیا زیادہ پانی پینے سے جلد میں لچک اور نمی بہتر ہوتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

خشک جلد اور لچک کا نقصان عام طور پر روزانہ کافی مقدار میں پانی نہ پینے سے جڑا ہوتا ہے۔ لیکن کیا یہ سچ ہے کہ وافر مقدار میں پانی پینے سے جلد کی نمی کی سطح بہتر ہوتی ہے؟

ہمارا جسم 80 فیصد پانی پر مشتمل ہوتا ہے، اور اسے اپنے افعال کو صحیح طریقے سے انجام دینے کے لیے روزانہ 1.5 لیٹر کی ضرورت ہوتی ہے۔ یہی چیز صحت کو برقرار رکھنے کے لیے اس اہم عنصر کو ضروری بناتی ہے۔


کیا پانی نہ پینے سے جلد خشک ہوتی ہے؟

پانی جسم کے اندر جلد کی سب سے گہری تہوں میں جمع ہوتا ہے جسے ڈرمیس کہا جاتا ہے۔ پانی جب اوپر کی تہوں کو سیراب کرتا ہوا جلد کی باہر کی سطح تک پہنچتا ہے تو اسکا کچھ حصہ بخارات بن کر ضائع ہوجاتا ہے۔

جلد پر موجود باریک ہائیڈرو لپڈک فلم جو پوری جلد کو ڈھانپتی ہے ان بخارات کو روکنے کے لیے رکاوٹ کا کام کرتی ہے، اور جلد کو خشک ہونے سے بچاتی ہے۔

تاہم، جلد خشک اس وقت ہوتی ہے جب یہ فلم اپنے فرائض کو پوری حد تک انجام دینے کے قابل نہیں ہوتی ہے۔ یہ جلد کی لچک اور نمی کے نقصان کے علاوہ قبل از وقت جھریوں کی شکل میں ظاہر ہوتی ہے۔

کچھ لوگ سوچ سکتے ہیں کہ یہ حالت مناسب پانی نہ پینے کی وجہ سے ہے، لیکن درحقیقت،خشک جلد مختلف اندرونی اور بیرونی عوامل کے نتیجے میں ہائیڈرولپیڈک فلم کے نقصان کیوجہ سے ہوتی ہے۔

کیا پانی پینے سے جلد کی توانائی کے نقصان کا علاج کیا جا سکتا ہے؟

پانی نہ پینا "خشک جلد کی وجوہات" کی فہرست میں سب سے نیچے ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ جلد کو نمی بخشنے کے لیے دن میں دو لیٹر پانی پینا ہی کافی نہیں ہے۔

جلد پر پانی پینے کا بنیادی اثر جسم میں خون کی روانی کو بہتر بنانا ہے، جو اسے بہتر آکسیجن اور غذائیت فراہم کرنے میں مدد دیتا ہے، لیکن یہ جلد کی سطح کو ہائیڈریشن فراہم نہیں کرتا اور اس کی لچک اور چمک میں اضافہ نہیں کرتا۔

جلد کی سطح کو موئسچرائز کرنے کا تعلق عام طور پر ایسی کریموں، سیرم اور ماسک کے استعمال سے ہوتا ہے جن میں فعال اجزاء وہ ہوتے ہیں جنہیں ان کی نمی بخش خصوصیات کے لیے جانا جاتا ہے جیسے ہائیلورونک ایسڈ، پولی گلوٹامک ایسڈ، گلیسرین، نیاسینامائڈ، سیرامائڈز اور پیپٹائڈز کے علاوہ شیا بٹر اور لینولین وغیرہ۔

یہ کہا جاتا ہے کہ جلد کو باقاعدگی سے ایکسفولیئٹ کیا جائے تاکہ اس کی سطح پر لگائے جانے والے نمی بخش اجزاء سے فائدہ اٹھانا آسان ہو جائے۔

جلد سے پانی کی کمی کی وجوہات کیا ہیں؟

جلد کی ہائیڈرولپیڈک فلم کو نقصان پہنچانے والے سب سے نمایاں عوامل میں موسم، آلودگی، الٹرا وائلٹ شعاعیں، نفسیاتی تناؤ ،جسمانی تھکاوٹ، تمباکو نوشی، مخصوص قسم کی دوائیں لینا، غیر متوازن غذا اپنانا، اس کے علاو۔ ایسی کاسمیٹکس استعمال کرنا جو جلد کی قسم اور ضروریات کے مطابق نہ ہوں ، شامل ہیں۔

اس میں عمر بھی اہم کردار ادا کرتی ہے، کیونکہ جلد اپنی توانائی کھو دیتی ہے اور عمر کے ساتھ اس میں موجود چکنائی کا تناسب کم ہوجاتا ہے۔ جو سطح سے پانی کے بخارات بننے کے عمل کو بڑھاتا ہے۔

خواتین میں خشک جلد عام طور پر مینوپاز کے بعد خراب ہو جاتی ہے جو ایسے ہارمونل عوارض کے نتیجے میں ہوتی ہے جو کہ پروٹین کے ساتھ منسلک ہوتے ہیں اور خلیوں کی جھلیوں کے ذریعے پانی کے گزرنے میں سہولت فراہم کرتے ہیں۔

ہم کیسے جانتے ہیں کہ جلد کو زیادہ ہائیڈریشن کی ضرورت ہے؟

یہ جاننا بہت آسان ہے کہ آپ کی جلد پیاسی ہے۔ ڈاکٹر اس شعبے میں عام طور پر ایک آسان طریقے پر انحصار کرتے ہیں، جس میں ہاتھ کی پشت کی جلد کو دو انگلیوں کے درمیان چند سیکنڈ کے لیے پکڑنا ہوتا ہے۔اگر جلد پھر اپنی سابقہ ​​پوزیشن پر آجائے تو اس میں نمی کی سطح اچھی ہے، لیکن اگر یہ ایک دوسرے سے منسلک رہتا ہے، تو اس کا مطلب ہے کہ اس میں نمی کی کمی ہے۔

نمی کی کمی کی دیگر علامات میں جلد کی چمک اور لچک کا کھو جانا شامل ہے، اس کے علاوہ ان جگہوں پر جہاں جلد پتلی ہے، جیسے آنکھوں کے ارد گرد، ہونٹوں، گردن اور ہاتھ کے پچھلے حصے میں چھوٹی جھریاں نظر آنا شامل ہیں۔

اس سلسلے میں، یہ بات قابل توجہ ہے کہ خشک جلد اور لچک کھودینے میں فرق کیا جائے۔ خشکی جلد کی تمام اقسام کو متاثر کر سکتی ہے، بشمول تیل والی جلد کو بھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں