مس جاپان ایک مرد سے غیر قانونی تعلقات کی وجہ سے ٹائٹل چھوڑنے پر مجبور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مس جاپان کا ٹائٹل جیتنے سے پیدا ہونے والے تنازعہ کے بعد ونر کیرولینا شینو نے خود کو ایک نئے مخمصے میں پھنسا دیا ہے۔

ایک شادی شدہ مرد کے ساتھ اس کے افیئر کے بارے میں پھیلنے والی افواہوں نے ملک میں بڑے پیمانے پر تنازعہ کو جنم دیا اور اسے "کوئینز کراؤن" اور مس کنٹری جیسے ٹائٹل سے ہاتھ دھونا ہڑے ہیں۔

سال 2022ء میں جاپانی شہریت حاصل کرنے والی 26 سالہ یوکرائنی دوشیزہ نے کل شام دیر گئے اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ایک تبصرے میں لکھا کہ ’’میں نے جو بڑا مسئلہ پیدا کیا اس کے لیے اور ہر ایک کی مایوسی اور دھوکہ دہی کے لیے مجھے واقعی افسوس ہے‘‘۔

شادی شدہ ڈاکٹر سے افیئر

اس مزید کہا کہ پہلے تو وہ اس قدر خوفزدہ اور الجھن میں تھی کہ وہ سچ نہیں بتا سکی۔

مس جاپان ایسوسی ایشن نے اعلان کیا ہے کہ اس نے مقابلہ کے ججوں اور اسپانسرز سے معذرت کرتے ہوئے اپنا ٹائٹل ترک کرنے کی شینو کی درخواست کو قبول کر لیا ہے۔

انہوں نے یہ کہہ کر وضاحت بھی کی کہ "مس کنٹری کا ٹائٹل باقی سال کے لیے خالی رہے گا"۔

یہ پیش رفت مقامی ہفتہ وار میگزین "شوکان بنشون" کی جانب سے مس جاپان کے ایک شادی شدہ ڈاکٹر کے ساتھ تعلقات کے بارے میں ایک سکینڈل سامنے آنے کے بعد سامنے آئی ہے۔

کیرولینا کو گذشتہ ماہ بیوٹی کوئین کا ٹائٹل جیتنے کے بعد بڑے پیمانے پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا، کیونکہ کچھ جاپانیوں نے اسے "آدھی جاپانی " قراردیا تھا۔ کیونکہ وہ یوکرین میں پیدا ہوئی تھیں اور صرف دو سال قبل ہی شہریت حاصل کی تھی۔

لوگوں نے دو شیزہ کے خلاف شدید مہم چلائی اور کہا کہ ایک سفید فام عورت جاپان کا چہرہ نہیں ہو سکتی"ْ۔

جبکہ شینو کے متعدد حامیوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ وہ مقابلے میں شامل ہونے کے لیے تمام معیارات اور شرائط پر پورا اترتی ہیں۔ درخواست دہندہ کا جاپانی شہری ہونا چاہیے اور وہ اس وقت جاپانی شہری ہیں۔ ان کی عمر بھی 26 سال سے کم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں