الجزائر میں رمضان کے دسترخوان پر اہم پکوان "فریک" کیا ہے؟

مرغی یا سرخ گوشت کے "شوربا" کے ساتھ یہ پکوان مقدس مہینے کے 30 دنوں میں کھایا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

"فریک" الجزائر میں رمضان کے دسترخوان پر اہم پکوانوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ جبکہ شعبان کے ان ایام میں اس پکوان کو تیار کرنے کی کہانی روایتی طریقے سے شروع ہوجاتی ہے جو گندم کے کھیتوں سے ہوتی ہوئی باورچی خانوں پر آن ختم ہوتی ہے۔

"فریک" جس کا نام ایک علاقے سے دوسرے علاقے میں مختلف ہوسکتا ہے، سبز گندم سے تیار کیا جاتا ہے۔ اس کی ثابت بالیوں کو کٹائی کے بعد آگ پر خاص طریقے سے بھونا جاتا ہے اور پھر اس وقت تک پیسنا پڑتا ہے جب تک کہ وہ پکانے کے لیے ٹھوس اور موٹے دانوں میں تبدیل نہ ہو جائیں۔ اور الجزائر میں یہ گوشت کے شوربے کے ساتھ پکایا جاتا ہے اور مقدس مہینے کے 30 دنوں میں دسترخوانوں کے لیے لازم و ملزوم ہوتا ہے۔

خواتین روایتی چکی کو ترجیح دیتی ہیں۔

الجزائر کے بہت سے علاقوں میں اس کی تیاری کے دوران خواتین تہوار کی مانند جمع ہوتی ہیں۔ مختلف علاقوں میں اسے"فریک"، "جاری،" یا "حریرہ" بھی کہا جاتا ہے۔ گندم کی ہری بالیاں لانے کے بعد، انہیں خشک کرنا، پھر انہیں روایتی چکیوں پر دلیے کی مانند پیسنا کرنا، اور پھر انگلیوں کی پوروں سے انہیں ایک ایسی لذیذ پکوان میں تبدیل کرنا جس کے بغیر الجزائری دعوتیں ادھوری ہوتی ہیں، یہ تمام کام خواتین روایتی مہارت سے کرتی ہیں۔

ان میں دلولہ عالیہ بھی شامل ہیں، جنہوں نے مشرقی الجزائر کے خنشلہ صوبے میں بابار شہر میں زمین کی خدمت کرتے ہوئے اپنی زندگی کے کئی سال گزارے۔ان کا ماننا ہے کہ "فریک" کا ذائقہ روایتی ہاتھ کی گھسائی کرنے والی مشینوں کے ذریعے گندم کو پیسنے سے آتا ہے۔ یہ قدیم پتھر کی چکیاں ہوتی ہیں۔

تاہم اب یہ علاقہ جدید بجلی سے چلنے والی چکیوں کے ذریعے بھی فریک کے لیے گندم تیار کرتا ہے۔

کھیتوں سے چولہے تک

ان کا کہنا ہے کہ "فریکیہ تیاری گرمیوں میں شروع ہوتی ہے، کیونکہ ہمارے علاقے میں گندم کی کٹائی اسی گرم موسم میں شروع ہوتی ہے، اس کے بعد، مصنوعات کو خشک کرنے کے لیے سورج کی روشنی میں لایا جاتا ہے۔ پھر اسے (شالیمو) مشین سے جلانے کے بعد ہم اسے پتھروں، کنکریوں اور گندم کے دانے سے کوٹتے اور پھر چھانتے ہیں۔

اسے پھر مہینوں تک محفوظ کیا جاتا ہے، اور آخری مرحلے کی تیاری کے لیے رمضان کے مہینے سے پہلے کے ان دنوں میں نکالا جاتا ہے۔ آخری مرحلے پر اسے سادہ چھلنی سے چھان کر نکالا جاتا ہے۔ اور ثابت گندم کو چکیوں پر دلیے کی صورت پیسا جاتا ہے۔

تاہم، اس کو تیار کرنے کا عمل ایک علاقے سے دوسرے میں مختلف ہوتا ہے۔جنوب کے کچھ علاقوں میں، مثال کے طور پر، مرد کھیتوں سے جو اور گندم لا کر تیاریوں میں حصہ لیتے ہیں ۔ گھریلو خواتین کو اس کی آخری شکل میں پیسنا، چھاننا اور تیار پکانا ہوتا ہے۔

گرم تجارت

فریک بازاروں میں بھی عام فروخت ہوتا ہے۔ الجزائر کے مشرق میں مصالحہ جات کی ایک دکان کے اندر، جہاں اس کی خوشبو ہر جگہ پھیلنے لگی تھی اور ماہ مقدس کی آمد کا اعلان کر رہی تھی، خریداری کے لیے آئی گھریلو خواتین میں ایک پچاس سالہ خاتون ایک بڑے ڈبے کے اندر فریک گندم دیکھ رہی تھیں، انہوں نے کہا کہ"ایسا لگتا ہے کہ جو کچھ یہاں پیش کیا جاتا ہے وہ اچھا ہے، لیکن مجھے نہیں معلوم کہ یہ نرم گندم سے نکالا گیا ہے یا سخت گندم سے۔"

ان کے ساتھی نے کہا کہ "اس کا ذائقہ اور لذت کھانا پکانے کے علاوہ نہیں جانی جا سکتی"

دکان کے مالک کا کہنا تھا کہ وہ بہترین فریک بیچ رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "یہاں دارالحکومت میں گھریلو خواتین کی طرف سے اس آئٹم کی بحالی اور مانگ میں اضافہ ہو رہا ہے،" جو اس بات کی تصدیق کرتا ہے کہ فریک دارالحکومت کے ناشتے کی میز سے غائب نہیں ہو سکتا۔

ہم نے الجزائر کے کچھ مشہور بازاروں سے جو سروے کیا اس کے مطابق، ایک کلو گرام "فریک" کی قیمت تقریباً 450 دینار تک پہنچ جاتی ہے۔نسبتاً زیادہ قیمت کے باوجود اسے خریدا جاتا ہے۔

صحت مند غذا

رمضان میں افطار کی دسترخوان میں منفرد ذائقے کے علاوہ، فریک کو فائبر، وٹامنز اور معدنیات سے بھرپور ہونے کی وجہ سے ایک صحت بخش خوراک مانا جاتا ہے، ماہرین کے مطابق اسے کھانے سے نظام انہضام کی صحت کو بہتر بنانے میں مدد ملتی ہے، اور اسہال اور قبض جیسے مسائل کو دور کرتا ہے۔

کچھ سائنسی مطالعات کے مطابق، ہر 100 گرام فریک میں 325 کیلوریز ہوتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں