ترکیہ میں شادی کے دن دولہا اور دلہن میں جھگڑا، شادی ہال میدان جنگ بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ میں شمال مغرب میں واقع ریاست تیکردگ کے ایک شادی ہال میں شادی کی طویل رات دولہا اور دلہن کے رشتہ داروں کے درمیان جھگڑے کے بعد میدان جنگ میں تبدیل ہوگئی۔ اس واقعہ کا سوشل میڈیا پر چرچا رہا۔ دولہا اور دلہن کے درمیان جھگڑا اس قدر بڑھا کہ پولیس کو مداخلت کرنا پڑی۔

ترک ویب سائٹس نے بتایا کہ دولہا اور دلہن کے رشتہ داروں کے درمیان جھگڑے کی وجہ دولہا اور اس کی دلہن کے درمیان جھگڑا تھا۔ جھگڑے میں پھر دونوں کے رشتہ داروں نے مداخلت کی۔ زبانی لڑائی ہاتھا پائی اور کرسیوں کے تصادم میں بدل گئی۔ اس سے قبل دونوں میں گالی گلوچ بھی ہوتی رہی۔ پولیس کے پہنچنے پر تقریب کو منسوخ کردیا گیا۔

ترک ویب سائٹس کے مطابق اس جھگڑے میں دلہن کے متعدد رشتہ دار زخمی ہوئے لیکن ان میں سے صرف ایک کو علاج کے لیے ہسپتال لے جایا گیا۔ شادی کی تقریب تیکرداگ صوبے کے کورلو ضلع میں شیخ سنان محلے میں روزنلر سٹریٹ پر ایک ہال کے اندر منعقد ہوئی۔

دولہا اور اس کی دلہن کو جھگڑے کی گواہی دینے کے لیے پولیس اسٹیشن لے جایا گیا اور بعد میں انہیں فوری طور پر چھوڑ دیا گیا۔ ترکیہ میں سوشل میڈیا صارفین نے شادی ہال میں ایمبولینس اور پولیس کی آمد کی تصاویر پھیلائیں اور کچھ لوگوں نے ان پر طنزیہ تبصرہ کیا اور کہا یہ ملک کی وہ پہلی شادی ہے جو ایمبولینس اور پولیس سے شروع ہوئی ہے۔

دیگر صارفین نے جھگڑے کے دوران دولہا اور دلہن کے رشتہ داروں کی دوسری تصاویر بھی گردش کیں اور ساتھ لکھا یہ لوگ اپنے رشتہ داروں کی شادی میں اس طرح سے برکت ڈال رہے ہیں۔ دولہا اور دلہن نے ابھی تک میڈیا کو کوئی بیان نہیں دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں