5 سال سے بھائی کی لاش کے ساتھ سونے والی آسٹریلوی خاتون پکڑی گئی

معمر خاتون کوڑے اور کیڑوں کے درمیان رہتی، گھر سے چوہے، انسانی فضلہ اور خون آلود انسانی ڈھانچہ بھی برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

آسٹریلیا میں ایک عجیب و غریب واقعہ پیش آیا ہے۔ ایک معمر آسٹریلوی خاتون نے گزشتہ 5 برس اپنے مردہ بھائی کی لاش کے پاس سوتے ہوئے گزار ڈالے۔ وہ گھر میں ہر روز اپنے بھائی کے پاس سوتی رہی۔ حکام کو اس معاملے کو پتہ چلا تو انہوں نے آکر اس معاملے کو دیکھا۔ گھر میں ہر طرف کوڑا بکھرا ہوا تھا۔ چوہے اور کیڑے ہر طرف موجود تھے۔ انسانی فضلہ پڑا ہوا تھا۔ ایک انسانی ہڈیوں کا خون آلود ڈھانچہ بھی موجود تھا۔

آسٹریلیا کی وکٹوریہ کاؤنٹی میں اس گھر کو ہمسایوں نے’’خوف کا گھر‘‘ اور ’’ بھوت شہر‘‘ کا نام دیا ہوا تھا۔ اس گھر کے متعلق علاقے میں خوف پھیلا ہوا تھا۔

برطانوی اخبار میٹرو کی طرف سے شائع اور العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ذریعے دیکھی گئی ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ وکٹوریہ کاؤنٹی پولیس نے خاتون کو نیو ٹاؤن کے متمول مضافاتی علاقے میں واقع گھر سے اس وقت حراست میں لیا جب سماجی بہبود کے حکام نے گھر میں اس خاتون اور اس کے ساتھ موجود لاش کو جانچا۔

افسران کو گھر میں داخل ہونے کے لیے خاتون کے گھر کی پچھلی کھڑکی کو توڑنے کے لیے تیز دھار آلات کا استعمال کرنا پڑا۔ فرانزک تفتیش کار بعد میں بائیو ہارڈ سوٹ پہنے گھر میں داخل ہوئے تاکہ انسانی ڈھانچے کی باقیات برآمد کی جا سکیں۔ یہ گھر پیکنگٹن سٹریٹ میں شاپنگ سنٹر سے صرف 250 میٹر کے فاصلے پر تھا۔

ستر کی دہائی کی اس خاتون کو بعد ازاں پولیس نے رہا کردیا اور اس کے بھائی کے قتل کی تحقیقات شروع کردیں۔ رپورٹ کے مطابق علاقے کے رہائشیوں نے اس گھر سے متعلق شکایت کی تھی جس کے بعد کارروائی کی گئی۔ اس گھر سے متعلق اس سے قبل بھی شکایت درج کرائی گئی تھی۔

علاقے کے ایک رہائشینے کہا کہ ہر رات ایک سڑی ہوئی لاش کے ساتھ رات کا کھانا کھانے کا تصور کریں ۔ پڑوسیوں نے بتایا گھر کے اندر اور ارد گرد جمع ہونے والی گندگی کی وجہ سے اس شخص کی لاش ملنے میں بڑی مشکل ہوئی ہوگی۔

تصویروں میں دکھایا گیا کہ وزارت خاندان اور ہاؤسنگ کے رہائشی اپارٹمنٹ میں طرح طرح کے کچرے کا ہجوم تھا۔ جگہ جگہ مردہ کیڑے بکھرے ہوئے تھے۔ لوگوں نے بتایا کہ پڑوسیوں کا کچرا بھی اکثر "غائب" ہو جاتا تھا کیونکہ یہ خاتون باہر سے لوگوں کا کوڑا بھی اندر لے جاتی تھی۔

اسی سوشل ہاؤسنگ کمپلیکس کے ایک اور کرایہ دار نکول سٹریٹن نے بتایا کہ یہ گھر ایک نمائش خانہ کا روپ دھار چکا تھا۔ چھت پر کچرے کے ڈھیر لگے ہوئے تھے۔ یہاں اس قدر گند تھا کہ آپ ٹوائلٹ استعمال نہیں کر پائیں گے۔ مجھے نہیں معلوم کہ وہ یہاں کیسے رہتی ہے۔ لوگوں نے طویل عرصے سے گھر کی حالت کے بارے میں حکام سے شکایت کی تھی۔

مرنے والا شخص خاتون کا بھائی اور جائیداد کے کرایہ دار کے طور پر جانا جاتا ہے۔ اسے آخری مرتبہ 2018 میں مقامی لوگوں نے دیکھا تھا۔ لاش ملنے کے بعد سے دو بیڈ روم والا مکان خالی پڑا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں