خبردار .. چار غذائیں فریج میں رکھنے سے مہلک ہو سکتی ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہم روزانہ بہت سی ایسی عادات اپناتے ہیں جو ہماری صحت کے لیے خطرناک ہیں۔ ان میں سب سے اہم کچھ سبزیوں کو چھیلنا، ریفریجریٹر میں رکھنا اور پھر انہیں دوبارہ استعمال کرنا ہے۔

لبنانی ماہر غذائیت ویرا ماتا نے ان عادات کے خطرے کے بارے میں خبردار کیا ہے۔

انہوں نے اپنے آفیشل انسٹاگرام اکاؤنٹ پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں بتایا کہ 4 ایسی چیزیں ہیں جنہیں اگر ہم ریفریجریٹر میں رکھیں تو وہ صرف زہریلی نہیں بلکہ موت کا باعث بن سکتی ہیں۔

ان میں سب سے اہم غذا لہسن ہے۔ انہوں نے کہا کہ لہسن کو چھیل کر فریج میں رکھنے کا عمل بہت غلط ہے، چونکہ لہسن کے انحطاط کے ساتھ کینسر کی اقسام سے منسلک ایک قسم کا خطرہ ہیں۔

دوسری اہم چیز "پیاز" ہے۔ انہی وجوہات کی بنا پر چھلی ہوئی پیاز کو فریج میں رکھنے کے خطرے سے خبردار کیا گیا۔ ماہر غذائیت کا کہنا ہے کہ اگر گھر میں کوئی بیمار ہے تو ہمیں صرف پیاز کو چھیل کر بیچ میں رکھ کر چھوڑ دینا ہے کیونکہ یہ تمام وائرس اٹھا کر ماحول کو صاف کر دے گا۔

انہوں نے 24 گھنٹے سے زیادہ پہلے پکائے ہوئے چاول کھانے کے خطرے پر بھی آگاہ کیا کیونکہ یہ لامحالہ سڑنا شروع ہو جاتے ہیں، چاہے انہیں فریج میں رکھا جائے۔

آخری وارننگ ادرک کے بارے میں آئی۔ انہوں نے کہا کہ اس کے چھلکے کا براہ راست تعلق گردے کی بیماری سے ہے، اور اس لیے زور دیا کہ اسے چھیل کر محفوظ نہ رکھا جائے۔

3 سے 4 دن سے زیادہ کھانا محفوظ رکھنا

یہ بات قابل ذکر ہے کہ کئی مطالعات میں بچا ہوا کھانا تین سے چار دن سے زیادہ فریج میں رکھنے سے منع کیا گیا ہے۔

انہوں نے خبردار کیا کہ اس مدت کے بعد فوڈ پوائزننگ کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

اگر آپ کو یقین نہیں ہے کہ آپ چار دن کے اندر بچا ہوا کھا لیں گے، تو ان کو فوری طور پر منجمد کرنے کی سفارش کی جاتی ہے، کیونکہ منجمد بچا ہوا زیادہ دیر تک محفوظ رہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں