افغانستان میں ہلاک فوجی کا والد بائیڈن کی تقریر کے دوران چیخنے لگا، گرفتار کرلیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی حکام نے افغانستان سے امریکی انخلا کے دوران ہلاک ہونے والے میرین کے والد سٹیون نکوئی کو ایوان نمائندگان کے اندر سٹیٹ آف دی یونین خطاب کے دوران صدر جو بائیڈن کے خلاف شور مچانے پر گرفتار کرلیا۔

امریکی کیپیٹل پولیس نے بائیڈن کی تقریر میں خلل ڈالنے کے الزام میں 51 سالہ سٹیون نکوئی کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔ پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ ہمارے افسران نے اسے چیخنا بند کرنے کو کہا اور جب اس نے ایسا نہیں کیا تو اس شخص کو ایوان نمائندگان کے سپیچ ہال سے باہر لے جایا گیا۔

پولیس نے بتایا کہ سٹیون نکوئی کو رکاوٹ یا خلل ڈالنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ کانگریس کی کارروائی میں خلل ڈالنا اور کانگریس کی عمارتوں میں مظاہرہ کرنا غیر قانونی ہے۔ سٹیون نکوئی کو فلوریڈا کے ریپبلکن رکن پارلیمان برائن مست نے سٹیٹ آف دی یونین خطاب میں شرکت کے لیے مدعو کیا تھا۔

کانگریس کی ویب سائٹ نے رپورٹ کیا کہ جب مست افغانستان میں خدمات انجام دے رہا تھا۔ اس نے بم ڈسپوزل ماہر کے طور پر کام کیا اور ایک دھماکے میں اپنی دونوں ٹانگیں گنوا دی تھیں۔

مست نے تقریر سے پہلے آن لائن پوسٹ کرتے ہوئے کہا کہ بائیڈن کی تقریر کے دوران نکوئی کی میزبانی کرنا ان کا اعزاز ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ میرین کارپورل کریم نکوئی کے والد ہیں، کریم نکوئی بائیڈن کے افغانستان سے تباہ کن انخلاء کی وجہ سے مارا گیا تھا۔ واضح رہے 26 اگست 2021 کو کابل کے حامد کرزئی بین الاقوامی ہوائی اڈے کے داخلی دروازے پر ایک بم دھماکہ ہوا تھا جس میں کریم نیکوئی سمیت 13 امریکی فوجی اور کم از کم 170 افغان شہری جاں بحق ہوگئے تھے۔

یہ دھماکہ ایک ہی خودکش بمبار نے کیا تھا اور داعش نے اس دھماکے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ اس واقعہ کے بعد بائیڈن اور ان کی انتظامیہ کے خلاف شدید تنقید سامنے آئی تھی۔ مست نے لکھا کہ نیکوئی کو گرفتار کیا گیا کیونکہ اس نے اپنے بیٹے کو یاد کرنے کے لیے بائیڈن کو پکارا تھا۔ بائیڈن نے کرزئی ہوائی اڈے کے گیٹ پر مارے جانے والوں کو کبھی عزت نہیں دی اور تباہ کن انخلا کو اپنی کامیابی کے طور پر پیش کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں