رمضان میں سعودی روایتی فنون کو کیسے اجاگر کیا جاتا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

رمضان المبارک کا بابرکت مہینہ سماجی تقریبات اور سرگرمیوں میں بڑی دلچسپی اور میڈیا اور آرٹ پروڈکشن کے حوالے سے غیر معمولی اہمیت کا حامل ہے۔

اس ماہ کے دوران خاندانی، مذہبی اور سماجی رابطے کی اقدار کو اجاگر کیا جاتا ہے اور بہت سے مرد اور خواتین شہریوں کو ان دنوں ان فنون اور مستند اقدار کو قریب سے جاننے کا موقع ملتا ہے جو ماضی سے ہمارے گہرے تعلق کی عکاسی کرتے ہیں۔ یہ موقع انہیں اس وقت ملتا ہے جب ہم روایتی فنون کو رمضان کی تقریبات اور ٹیلی ویژن پروگراموں کو سجاتے ہوئے دیکھتے ہیں۔

سعودی عرب کے مختلف علاقوں کی اپنی ایک خاص روایتی پہچان ہے۔ مثلا شمالی علاقوں میں السدو ،جنوبی علاقوں میں ’قط العسیری‘۔مغربی خطے میں المنجور اور رواشین آرٹ اور وسطی علاقوں میں نجدی دروازوں پر کندہ کاری، مشرقی علاقے سے حساوی پلاسٹر کے علاوہ کےعلاوہ تمام فنون مل کر ایک قدیم اور متنوع سعودی فنکارانہ شناخت بناتے ہیں، جو سعودی عرب کی عظیم فنکارانہ اور ثقافتی دولت کی عکاسی کرتا ہے۔

منظرعام پر سعودی روایتی فنون کی موجودگی رائل انسٹی ٹیوٹ آف ٹریڈیشنل آرٹس (ورث) کے ذریعے شروع کیے گئے بہت سے پروگراموں اور اقدامات کے ذریعے حاصل ہونے والی زبردست دلچسپی کو تقویت دیتی ہے، تاکہ روایتی فنون کو محفوظ رکھنے کی اہمیت کے بارے میں بیداری پیدا کرنے میں اپنا کردار ادا کیا جا سکے۔ سعودی نوجوان، سرمایہ کاری کریں،اپنی صلاحیتوں کو فروغ دیں اور ہمارے قومی فنون کو اجاگر کرنے میں اپنا حصہ ڈالیں۔

رمضان کے مقدس مہینے کے دوران رائل انسٹی ٹیوٹ آف ٹریڈیشنل آرٹس (ورث) رمضان کے سیزن میں بہت سی انٹرایکٹو اور لائیو سرگرمیوں میں حصہ لیتا ہے، جو کہ ریاض، جدہ اور دمام میں منعقد ہوتا ہے۔ یہ مختلف ورکشاپس اور تقریبات پیش کرتا ہے۔

رائل انسٹی ٹیوٹ آف ٹریڈیشنل آرٹس (ورث) قومی شناخت کو اجاگر کرنے اور سعودی روایتی فنون کو تقویت دینے کے لیے ایک سرکردہ ادارہ ہے کیونکہ یہ روایتی فنون کے بھرپور اور منفرد ثقافتی ورثے اور ان سے وابستہ فنکارانہ کاموں کو بڑھا کر مملکت کی ثقافت کی نمائندگی کرنے کے لیے کام کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں