مسجد نبوی ﷺ کے دروازوں کے مخصوص ڈیزائن سعودی توجہ اور دیکھ بھال کے عکاس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مسجد نبوی میں بہت سی نمایاں تاریخی یادگاریں ہیں جن کی مختلف اسلامی ادوار میں سرپرستی اور دیکھ بھال کی جاتی رہی ہے۔ یہ توجہ اور دیکھ بھال سعودی دور کے ساتھ ابھری اور پروان چڑھی۔ سعودی عرب کے بادشاہوں نے مسجد نبوی کے فن تعمیر اور ترقی پر خصوصی توجہ دی ہے۔

حرم نبوی کی یاد گار نشانیوں میں مسجد کے دروازے بھی شامل ہیں۔ یہ دروازے ہمارے حبیب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی مسجد کے لیے ایک خاص شناخت کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ ان دروازوں کی تعداد 100 ہو چکی ہے۔ یہ دروازے مسجد اور اس کی توسیعات میں چاروں اطراف موجود ہیں۔ ماہ صیام میں ان دروازوں کی دیکھ بھال کے لیے 280 ملازمین 24 گھنٹے مصروف عمل رہتے ہیں۔

مسجد نبوی کا دروازے مخصوص ڈیزائن کے ساتھ
مسجد نبوی کا دروازے مخصوص ڈیزائن کے ساتھ

شاہ فہد بن عبدالعزیز کی توسیع میں سات چوڑے دروازے بنائے گئے ہیں۔ ان میں سے تین شمالی جانب اور دو مشرقی اور دو مغربی جانب میں ہیں۔ ہر داخلی دروازے میں سات دروازے ہیں۔ ان دونوں کے درمیان پانچ دروازے ہیں۔ ہر دروازے کی چوڑائی 3 میٹر اور اونچائی 6 میٹر ہے، اس کی موٹائی 13 سینٹی میٹر سے زیادہ ہے۔ ایک دروازے کا وزن سوا ٹن ہے پھر بھی اس دروازے کو ایک ہاتھ سے کھولا اور بند کیا جا سکتا ہے کیونکہ دروازے کا ہینڈل کھلنے اور بند کرنے کے عمل میں لچک کی نمائندگی کرتا ہے۔ یہ دروازے 1600 کیوبک میٹر سے زیادہ ساگون کی لکڑی سے بنائے گئے تھے۔ ہر دروازے میں 1500 سے زیادہ سنہری، کندہ شدہ ٹکڑوں کا استعمال کیا گیا ہے۔ دروازے کے درمیان ایک دائروی حصہ ہے جس میں ’’ محمد رسول اللہ‘‘ لکھا گیا ہے۔

مسجد نبوی کا بڑا دروازہ
مسجد نبوی کا بڑا دروازہ

ان دروازوں کو فرانس میں سونے سے آراستہ تانبے اور امریکہ میں جمع کی جانے والی بہترین قسم کی لکڑی ’’ساگوان‘‘ کے ساتھ ملا کر سپین کے شہر بارسلونا پہنچایا گیا۔ انہیں خصوصی تندوروں میں رکھا گیا تاکہ انہیں پانچ ماہ سے زیادہ کی مدت میں خشک کیا جا سکے۔ انہیں لیزر کی خصوصیت سے لیس آریوں سے کاٹا گیا، ۔ پھر تانبے کے ٹکڑوں کو ڈالا گیا۔ پھر انہیں سونے سے ملمع کیا گیا اور دروازوں سے جوڑ کر حتمی شکل دینے سے پہلے پالش کیا گیا۔

آج یہ مخصوص دروازے مسجد نبوی کیلئے سعودی عرب کی مسلسل دیکھ بھال اور اس کے فن تعمیر پر مسلسل کام کے گواہی دیتے نظر آتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں