اسرائیل پر حملے میں ایران کے ’قدر‘، ’عماد‘ اور ’خیبر‘ میزائل استعمال کئے گئے

میزائلوں کی درستی 5 میٹر سے کم ہے، "قدر" اور "عماد" 450 سے 500 کلوگرام اور ’’ خیبر‘‘ 320 کلو وزنی وار ہیڈز لے جا سکتا: مشیر سربراہ پاسداران انقلاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر کے مشیر میجر جنرل علی بلالی نے سی این این چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ تہران نے اسرائیل پر اپنے حالیہ حملے میں "قدر"، "عماد" اور "خیبر" میزائلوں کا استعمال کیا۔ ایرانی جنرل نے نشاندہی کی کہ ان میزائلوں کی درستی 5 میٹر سے کم ہے ۔ "قدر" اور "عماد" میزائلوں کی رینج 1600 کلومیٹر سے زیادہ ہے اور یہ 450-500 کلوگرام وزنی وار ہیڈز لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ "خیبر" میزائل کی وار ہیڈز لے جانے کی صلاحیت 320 کلوگرام تک ہے۔

امریکی سی این این چینل نے کہا کہ امریکہ ایران کے میزائل ہتھیاروں کو مشرق وسطیٰ میں سب سے بڑا سمجھتا ہے۔ یاد رہے تہران اس بات پر زور دیتا ہے کہ اس کا میزائل پروگرام خالصتاً دفاعی ہے۔ ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر کے مشیر نے مزید کہا کہ ہمارے پاس ایسی کامیابیاں ہیں جن کا ابھی تک اعلان نہیں کیا گیا ، ہم اپنے دفاع کو برقرار رکھنے میں خود مختار ہیں۔ ہم اسے ایسے ہی جاری رکھیں گے۔

جنرل بلالی کے مطابق ان کے ملک نے اسرائیل پر حالیہ حملے میں ڈرون ’’شاہد 136‘‘ کا استعمال کیا۔ 13 اپریل کو ایران نے اسرائیل کی طرف ڈرونز اور میزائلوں سے حملہ کیا تھا۔ اس کے جواب میں 19 اپریل کو اسرائیل نے بھی ایرانی کے علاقے اصفہان پر محدود حملہ کیا۔ ایران کا حملہ یکم اپریل کو اسرائیل کی جانب سے دمشق میں ایرانی قونصل خانے پر حملے کے جواب میں تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں