سعودی عرب: میکڈونلڈ کے کھانے میں زہر کی افواہیں، ریسٹورنٹ نے تردید کردی

زہر کا ذریعہ نہیں بن رہے، الزامات اشتعال انگیز ہیں: میکڈونلڈ، وزارت صحت نے بھی اطلاعات کو غلط کہ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں دنیا بھر کے معروف فاسٹ فوڈ ریسٹورنٹ میکڈونلڈ کے حوالے سے زہر کا کیس سامنے آنے کے بعد نئے کیسز کی سامنے آنے کی اطلاعات سوشل میڈیا پر گردش کرنے لگیں۔ دیکھتے ہی دیکھتے یہ اطلاعات بڑے پیمانے پر سوشل میڈیا پر پھیل گئیں اور معاملہ ’’ ریاض زہر‘‘ کے نام مشہور ہوگیا۔ اس صورت حال میں ریاض میں فاسٹ فوڈ چین میکڈونلڈ کی انتظامیہ نے زہر کے حوالے سے الزامات کی فوری تردید کی اور ان الزامات کو متضاد اور اشتعال انگیز قرار دیا ہے۔

مشہور بین الاقوامی ریسٹورنٹ کمپنی نے "ایکس" کے ذریعے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہمارے ریسٹورنٹس میں زہر دینے کا معاملہ سامنے آنے کی حالیہ وسیع افواہیں بے بنیاد ہیں۔ حالیہ زہر کے بحران کے ابھرنے کے بعد سے ہمارے ریسٹورنٹس زہر کے کسی بھی معاملے کا ذریعہ نہیں رہے ہیں۔ اس کی وزارت صحت نے بھی تصدیق کی ہے کہ ریسٹورنٹ کی جانب سے زہر کے کوئی ذرائع سامنے نہیں آئے سوائے ایک معاملہ کے جس کو سرکاری حکام نے نمٹا دیا ہے۔

زہر کے حالیہ بحران نے ریسٹورنٹس میں پیش کیے جانے والے کھانے کی حفاظت اور سرکاری حکام کے اس پر کنٹرول کے معیار کے بارے میں سوالات اٹھا دئیے ہیں۔ سوشل میڈیا پر معاملہ کے پھیلنے کی وجہ سے حکام متعلقہ شاخوں کو بند کر کے سرکاری عملی پوزیشن لینے اور لیبارٹریز کے قیام اور ضروری ہیلتھ پروٹوکول کو لاگو کرنے پر بھی مجبور ہوگئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں