ووٹ کیلئے شناختی تصویر لازمی کرنے کا قانون بنانیوالے بورس جانسن اپنا کارڈ بھول آئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانیہ کے سابق وزیر اعظم بورس جانسن کو برطانیہ کے مقامی انتخابات میں ووٹ ڈالنے کے لیے شناختی کارڈ لانا بھول جانے پر پولنگ سٹیشن سے ہٹا دیا گیا۔ برطانیہ میں بلدیاتی کونسل کے الیکشن تھے۔ برطانوی میڈیا نے جمعہ کو رپورٹ کیا کہ جانسن جنہوں نے ووٹرز کے لیے دفتر میں رہتے ہوئے فوٹو آئی ڈی پیش کرنے کی شرط متعارف کرائی تھی کو جمعرات کو جنوبی آکسفورڈ شائر میں پولنگ سٹیشن کے عملے نے بتایا کہ وہ اپنی شناخت کے ثبوت کے بغیر ووٹ نہیں ڈال سکیں گے۔

سابق برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن اپنی اہلیہ کیری سائمنڈز کے ساتھ لندن میں بلدیاتی کونسل کے انتخابات میں ووٹ ڈالنے کے لیے پولنگ اسٹیشن پہنچے تھے۔ سکائی نیوز نے رپورٹ کیا کہ 2019 سے 2022 تک کنزرویٹو وزیر اعظم کے طور پر خدمات انجام دینے والے جانسن بعد میں اپنا ووٹ ڈالنے میں کامیاب ہوگئے اور انہوں نے کنزرویٹو کو ووٹ دیا۔

یاد رہے جانسن نے 2022 میں ایک انتخابی قانون متعارف کرایا جس میں تصویر کی شناخت کی ضرورت ہوتی ہے۔ یہ نیا قانون پہلی بار گزشتہ سال مقامی انتخابات میں لاگو کیا گیا تھا۔ لیکن جمعرات کو پہلا موقع تھا جب انگلینڈ اور ویلز میں ووٹروں کی ایک بڑی تعداد کو ووٹ ڈالنے کے لیے پاسپورٹ یا ڈرائیونگ لائسنس کے ذریعہ شناخت پیش کرنا پڑی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں