مہنگی دیکھ بھال سے بچنے کیلئے برلن انتظامیہ گوئبلز کا تاریخی مکان عطیہ کرنے پر آمادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

جرمنی میں برلن سٹی کی میونسپلٹی نے نازی دور میں سیاسی پروپیگنڈہ کے وزیر جوزف گوئبلز کی ملکیت ولا کو عطیہ کرنے پر آمادگی ظاہر کردی۔

اس مکان کو گرانا یا فروخت کرنا مشکل ہے اور مہنگی دیکھ بھال کی وجہ سے یہ مکان مبونسپلٹی پر ایک بوجھ بن رہا تھا۔ اسی بنا پر فی الحال اسے عطیہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جرمنی کے دارالحکومت کے آس پاس کے دیہی علاقوں میں 17 ہیکٹر کے وسیع رقبے پر ایک جھیل کے ساتھ تعمیر کی گئی اس پرتعیش پراپرٹی کو بحال کرنے میں برسوں سے برلن حکام کو مشکلات کا سامنا ہے۔

جمعرات کو مقامی حکومت کے اجلاس کے دوران وزیر خزانہ سٹیفن ایورز نے کہا کہ میں یہ زمین کسی بھی اس شخص کو دے رہا ہوں جو اس کی دیکھ بھال کرنا چاہتا ہے۔ یہ برلن کا تحفہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ پراپرٹی برلن سے تقریباً 40 کلومیٹر کے فاصلے پر برینڈن برگ ریاست میں واقع ہے، لیکن نہ تو اس علاقے کے حکام اور نہ ہی حکومت اس طرح کے فراخدلانہ تحفے میں دلچسپی ظاہر کر رہی ہے۔

واضح رہے یہ زمین 1936 میں جوزف گوئبلز کو پیش کی گئی تھی اور گوئبلز کی سربراہی میں ایک بہت بڑی فلم پروڈکشن کمپنی ’’یونیورسل فلم‘‘ کی فنڈنگ سے اس پر ایک بہت بڑا گھر تعمیر کیا گیا تھا۔

لیٹر ’’ U ‘‘ کی شکل کی عمارت میں ایک نجی سنیما ہال اور کشادہ کمرے ہیں جو بوگینسی جھیل کا نظارہ فراہم کرتے ہیں۔ یہیں پر گوئبلز سٹارز، شخصیات اور محبوباؤں کو ملتا تھا۔

کسی بھی خریدار یا حمایتی فریق کی عدم موجودگی میں برلن کے حکام جائیداد کو منہدم کرنے اور زمین کی تزئین و آرائش پر غور کر رہے ہیں ۔ کیونکہ جرمن ذرائع ابلاغ "Bild" اور "RBB" کی رپورٹ کے مطابق اس مکان کی سالانہ سیکورٹی اور دیکھ بھال کے اخراجات لاکھوں میں ہیں۔

واضح رہے گوئبلز ایڈولف ہٹلر کے قریبی ساتھیوں میں سے ایک تھا۔ اس نے 1939 میں برلن کے شمال میں تقریباً 40 کلومیٹر کے فاصلے پر وانڈلِٹز کے قصبے کے قریب جھیل بوگنسی کے قریب جنگلاتی مقام پر پُرتعیش ولا بنایا تھا۔

یہاں وہ اپنی بیوی اور چھ بچوں کے ساتھ رہتا تھا۔ گوئبلز نے اس جگہ پر موجود ولا اور ایک سابقہ گھر کو نازی رہنماؤں، فنکاروں اور اداکاروں کی تفریح کے لیے استعمال کیا۔ کہا جاتا ہے کہ وہ اسے رومانوی مقابلوں کے لیے جگہ کے طور پر بھی استعمال کرتا تھا۔ جنگ کے بعد 17 ہیکٹر کی جگہ کو مختصر طور پر ایک ہسپتال کے طور پر استعمال کیا گیا۔ پھر مشرقی جرمن کمیونسٹ پارٹی کے یوتھ ونگ نے اس پر قبضہ کر لیا اور یہاں کئی رہائشی عمارتوں سمیت ایک تربیتی مرکز بنایا۔

خیال رہے کہ 2016 میں برلن رئیل اسٹیٹ فنڈ نے "گوئبلز ولا" کو فروخت کرنے سے دستبرداری اختیار کر لی تھی۔ یہ ولا خستہ حال ہو چکا تھا۔ یہ دستبرداری اس ڈر سے تھی کہ اسے ایسی پارٹیاں ضبط کر لیں گی جو اس کی مستحق نہیں تھیں۔ یا یہ نازیوں کے لیے ایک علامتی جگہ بن جائے گا۔ اس کے بعد سے یہ سائٹ دن کے مسافروں کے لیے ایک رکنے کا مقام بن گئی ہے۔ برلن کے ایک جزیرے پر واقع اس خاندان کا پرتعیش گھر 2011 میں نیلامی میں فروخت ہوا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں