سعودی عرب میں بلند و بالا مقامات پر براہ راست بین الاقوامی پروازوں کا انتظام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی سیاحتی مقامات میں دلچسپی بڑھانے کے تناظر میں سعودی ٹورازم اتھارٹی کے سی ای او فہد حامد الدین نے ’’العربیہ‘‘ کو انٹرویو میں انکشاف کیا کہ سعودی عرب کے بلند و بالا مقامات الباحہ، ابھا، عسیر اور طائف میں براہ راست بین الاقوامی پروازوں کا انتظام کیا گیا۔ موسم گرما کے دوران ان مقامات پر سیاحوں کی آمد کو آسان بنایا جا رہا ہے تاکہ وہ وہ سیاحت کے جوہر کو دریافت کر سکیں۔

زیادہ تر گرمیوں کے موسم میں ان سیاحتی مقامات پر کچھ خلیجی ملکوں کے شہریوں کے ساتھ ساتھ مقامی سیاحوں کی موجودگی بھی بڑھ جاتی ہے۔ سعودی ٹورازم اتھارٹی نے یہ قدم اس بنا پر اٹھایا ہے کہ گرمیوں میں ان مقامات کے درجہ حرارت میں کمی آئی ہے۔

حال ہی میں ٹورازم اتھارٹی کی طرف سے اعلان کردہ قدم ملک کے ثقافتی اجزاء کو اجاگر کرے گا اور اس طرح دوسرے ممالک کے شہریوں کو ایک عالمی سیاحتی مقام کے طور پر ان مقامات کا دورہ کرنے کی ترغیب ملے گی۔ سعودی سیاحتی نظام مجموعی طور پر خطوں کی ترقی میں اپنا حصہ ڈالنا چاہتا اور انہیں عالمی پرکشش مقامات میں تبدیل کرنا چاہتا ہے۔ اسی طرح پرکشش سرمایہ کاری کے ماحول کو بہتر بنا کر ان مقامات کی ترقی میں مزید سرمایہ کاری کو متوجہ کرنا چاہتا ہے۔

سعودی عرب نے متعدد ممالک کے شہریوں کو الیکٹرانک طور پر وزٹ ویزا دستیاب کرایا۔ اب 66 ملک ایسے ہیں جو سعودی عرب کا وزٹ ویزا الیکٹرانک طور پر حاصل کر سکتے ہیں۔ حال ہی میں اس سہولت سے فائدہ اٹھانے والے ملکوں میں جو نئے ملک شامل ہوئے ان میں بہاماس، بارباڈوس اور گریناڈا شامل ہیں۔

یہ نیا قدم ان کوششوں کی توسیع کے طور پر اٹھایا گیا کہ جن کے تحت سعودی عرب کے دنیا کے ساتھ روابط کو بڑھایا جارہا ہے۔ سعودی عرب کے ویژن 2030 کے تحت سیاحت کی شعبہ کو ترقی دے کر 2030 میں سعودی عرب آنے والے سیاحوں کی تعداد کو 70 ملین تک پہنچانا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں