سعودی عرب: ثقافتی اثاثوں کے تحفظ کے لیے دو انشورنش کمپنیوں کی خدمات متعارف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزارت ثقافت کے سرکاری ترجمان عبدالرحمٰن المطوع نے انکشاف کیا ہے کہ ثقافتی انشورنس پروڈکٹ کے اجرا کے ساتھ ہی انشورنس کمپنیوں نے ثقافتی شعبے کے لیے انشورنس مصنوعات فراہم کرنا شروع کردی ہیں۔ اس وقت دو انشورنس کمپنیاں ہیں جو یہ مصنوعات پیش کر رہی ہیں۔ کمپنیوں کی تعداد بڑھانے کے لیے انشورنس اتھارٹی کے تعاون سے کام جاری ہے۔ ان اقدامات کا مقصد سعودی عرب میں ثقافتی نظام کی خدمت کے شعبے کو فعال کرنا ہے۔

سعودی وزیر ثقافت المطوع
سعودی وزیر ثقافت المطوع
Advertisement

عبدالرحمٰن المطوع نے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو خصوصی بیانات میں کہا کہ ثقافتی انشورنس پروڈکٹ کے اندر ثقافتی اثاثوں پر انشورنس کی قیمت کا تخمینہ لگانا بہت سے عوامل پر منحصر ہے۔ ان عوامل میں اثاثہ سے وابستہ خطرات، اثاثے کی قدرخ اثاثے کی حالت، اس کے تحفظ کا نظام، اثاثے کو ہونے والے پہلے کے نقصانات اور دیگر چیزیں شامل ہیں۔

ثقافتی اثاثوں کا تحفظ

انہوں نے مزید کہا کہ ثقافتی انشورنس پروڈکٹ کا آغاز وزارت ثقافت کی کوششوں کے تحت کیا گیا ہے جس کا مقصد ثقافتی اثاثوں کو ان کی تمام شکلوں میں تحفظ فراہم کرنا ہے۔ بیمہ کے مقاصد میں سے ایک مقصد بہترین طریقہ کار اور طریقوں پر عمل پیرا ہونے میں مدد کرنا ہے۔ ثقافتی شعبے میں سرمایہ کاری کے لیے ایک محفوظ ماحول پیدا کرنا بھی بیمہ اتھارٹی کی کوششوں میں شامل ہے۔ ثقافتی اثاثوں کا تحفظ سعودی عرب کے ’’ویژن 2030‘‘ کے اہداف کے حصول کا ہی ایک حصہ ہے۔

انشورنس اتھارٹی کے ساتھ تعاون

عبد الرحمن نے زور دیا کہ وزارت ثقافت ثقافتی اثاثوں کے لیے انشورنس کی درخواستیں وصول کرنے کے لیے ذمہ دار ادارہ نہیں ہے بلکہ وہ انشورنس اتھارٹی کے تعاون سے اس شعبے کو اس قابل بنانے کے لیے کام کر رہی ہے کہ وہ سعودی میں ہر قسم کے ثقافتی اثاثوں کو تحفظ فراہم کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں