سعودی عرب: گیمنگ اور ای سپورٹس سیکٹر کا بجٹ بڑھا کر 1.09 بلین ریال کر دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے 2030 تک گیمنگ اور ای سپورٹس سیکٹر کے لیے عالمی مرکز بننے کے اپنے ہدف کو حاصل کرنے کے لیے تیزی سے اقدامات کیے ہیں۔ اب یہ شعبہ سرمایہ کاری، اختراعی اقدامات، متعلقہ اداروں اور عالمی تنظیموں کے ساتھ اتحاد کی تیز رفتار کے ساتھ بڑی نشاۃ ثانیہ کا مشاہدہ کر رہا ہے۔ سعودی قیادت کی طرف سے اس شعبہ میں بڑی دلچسپی ظاہر کی گئی۔ اس کے بعد بنیادی ڈھانچے کی ترقی، مقامی ٹیلنٹ میں سرمایہ کاری اور جدید ترین طریقوں سے گیمنگ مواد کی تخلیق کو فروغ دیا گیا۔ ای سپورٹس سیکٹر میں ایک نمایاں کھلاڑی کے طور پر سعودی عرب کی پوزیشن مستحکم ہوگئی ہے۔

نیشنل ڈویلپمنٹ فنڈ نے سال 2022 میں 300 ملین ریال کے بجٹ کے ساتھ گیمنگ اور ای سپورٹس سیکٹر کی مالی معاونت کے لیے ایک پروگرام کی منظوری دی اور 2023 کے آخر تک پروگرام کا بجٹ بڑھا کر 1.09 بلین ریال کر دیا گیا۔ اس کا مقصد نجی شعبے میں مالیاتی اداروں کی شراکت داری میں سوشل ڈیولپمنٹ بینک، پراپرٹی فنانسنگ پروڈکٹس اور بزنس ایکسلریٹر کے ذریعے قرض کی مصنوعات فراہم کرنا ہے۔ الیکٹرانک گیمز کو تیار کرنے کے شعبوں کو ہدف بنایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ کھیلوں کے کلبوں کو بین الاقوامی مقابلوں میں مدد فراہم کی جارہی ہے تاکہ مملکت کی دنیا میں گیمنگ اور الیکٹرانک کھیلوں کے شعبے کی موجودگی کو بڑھایا جا سکے۔

واضح رہے سعودی عرب میں گیمنگ اور الیکٹرانک کھیلوں کے لیے قومی حکمت عملی شروع کی گئی جسے نافذ کرنے کے لیے 20 سرکاری اورنجی اداروں کے ذریعے شروع کیا جائے گا۔ اس حوالے سے اقدامات میں بزنس انکیوبیٹرز کا آغاز، گیمنگ اور الیکٹرانک کھیلوں کے بڑے ایونٹس کی میزبانی کرنا، تعلیمی اکیڈمیوں کا قیام اور ریگولیٹری ضوابط تیار کرنا بھی شامل ہے۔

اس حکمت عملی کا مقصد جی ڈی پی میں اس شعبے کے ذریعہ بالواسطہ اور بالواسطہ طور پر تقریباً 50 بلین ریال کو شامل کرنا ہے۔ اس شعبہ کی ترقی سے 39 ہزار سے زیادہ ملازمتوں کے نئے مواقع فراہم کئے جائیں گے۔ حکمت عملی کے تحت سعودی عرب کو ای سپورٹس کے پیشہ ورکھلاڑیوں کے اعتبار سے دنیا کے ٹاپ تھری ملکوں میں شامل کرانا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں