اردن میں تقریب، ملکہ رانیا اور شہزادیوں کے ملبوسات نے دل موہ لیے

ملکہ رانیا ورثے کو جدید لمس کے ساتھ پیش کرنے والے لباس ، تاج اور ہیرے کی بالیوں کے ساتھ تھیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

گزشتہ روز اردن کے شاہی خاندان نے اپنے آئینی اختیارات سنبھالنے کے بعد شاہ عبداللہ دوم کی سلور جوبلی کے موقع پر منعقدہ قومی تقریب میں شرکت کی۔ شاہی خاندان کے افراد کی شکلیں بہت سے معنی اور پیغامات دے رہی تھیں۔ جنہیں ہم آپ کو ذیل میں دریافت کرنے کی دعوت دیتے ہیں۔

Advertisement

ملکہ رانیا اس موقع پر خوب چمک رہی تھیں انہوں نے ورثے کے کردار کو جدیدیت کا لمس دیتے ہوئے اس انداز کا جوڑا پہن رکھا تھا جو ان کی خوبصورتی میں نمایاں تھا۔ ملکہ رانیا کے سفید لباس پر اردنی ڈیزائنر لیتھ مالوف کے دستخط تھے۔ جو اپنے ملک کے زرعی ورثے اور ثقافتی گہرائی سے متاثر تھے۔ اس کے اوپر سرمئی رنگ کے کپڑے سے سجا ہوا پیٹرن تھا۔ بٹن اردن کے سات نکاتی ستارے کی نمائندگی کر رہے تھے اور جو اتحاد اور امید کی علامت تھے۔ مکئی کے پھولوں کی شکل میں کڑھائی تھی جو کثرت اور خوشحالی کی نمائندگی کر رہی تھی۔ اس لباس پر کام کرنے میں تقریباً 200 گھنٹے لگے اور ملکہ رانیا نے اسے تاج اور ہیرے کی بالیوں سے مکمل کیا۔

اس تقریب میں ولی عہد حسین اور ان کی اہلیہ شہزادی رجوہ کے لیے پہلی بار عوام کے سامنے آنے کا موقع تھا۔ شہزادی رجوہ ایک لمبے سرخ لباس میں چمک رہی تھیں۔ اس کے ساتھ تین جہتی ورثے کی کڑھائیوں سے سجی ٹوپی تھی جو اردنی پرچم کے رنگوں سے مزین تھی۔ اس کے اوپر سعودی ہاؤس آف ہنیڈا نے دستخط کیے تھے۔ اس لباس کو مکمل کرنے میں 950 گھنٹے سے زیادہ کا وقت لگا تھا۔

شہزادی سلمیٰ نے چاندی کے لباس میں نظر آنے کا انتخاب کیا جو اردنی ڈیزائنر اڈیلینا جوائس کی عمدہ کڑھائی سے مزین تھا۔ اس لباس کی اصل فلسطینی اور برطانوی ہے۔ یہ اپنے کلاسک اور مرصع ڈیزائنوں میں منفرد اور ممتاز ہے۔

جہاں تک شہزادی سلمیٰ کا تعلق ہے وہ سبز رنگ کے لباس میں نظر آئیں جس پر دبئی میں مقیم فلسطینی ڈیزائنر اور ریما برانڈ کی مالک ریما البنا کے دستخط موجود تھے۔ شہزادی سلمیٰ کا لباس ان کی فوجی وردی سے متاثر تھا اور اس پر اردنی پھولوں کی کڑھائی کی گئی تھی۔ یہ اردنی ورثے کی طاقت اور خوبصورتی کی روح کو پیش کر رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں