.

دنیا بھرسے 18 لاکھ فرزندان توحید کی حج کے لیے سعودی عرب آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا بھر سے فرئضہ حج کی ادائی کے لیےعازمین حج کی سعودی عرب آمد کا سلسلہ جاری ہے۔ پانچ ذی الحج منگل کے روز تک بیرون ملک سے مجموعی طور پر 18 لاکھ 869 عازمین حج سعودی عرب پہنچ چکے تھے۔ گذشتہ برس کی نسبت یہ تعداد 1 لاکھ 13 ہزار 107 زیادہ ہے۔ ان میں 93 ہزار 792 خشکی کے راستوں سے سعودی عرب داخل ہوئے، 16 لاکھ 89 ہزار 827 فضائی راستوں اور 17 ہزار 250 سمندری راستوں سے حجاز مقدس پہنچے ہیں۔

ادھر سعودی عرب کی حکومت نے عازمین حج کی سہولت اور مدد کے لیے تمام شعبوں میں بڑی تعداد میں عملہ تیار کیا ہے۔ سعودی عرب کی حکومت نے حجاج کرام کی خدمت کے لیے تمام سہولیات کی فراہمی کو یقینی کا عزم کررکھا ہے۔ ہرشعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد عازمین حج کی خدمت کررہے ہیں۔ دیگر اداروں کی طرح سعودی عرب کی وزارت صحت کی طرف سے اللہ کے مہمانوں کی صحت کی حفاظت کے لیے 30 ہزار مردو خواتین پرمشتمل عملہ تعینات کیا ہے۔ اس عملے میں سرکاری اور نجی اداروں سے وابستہ افراد کار شامل ہیں۔

سعودی عرب کے سرکاری ادارہ شماریات نے 1440ھ کے حج کے اعدادو شمار مرتکب کے لیے ' www.stats.gov.sa' تیار کی ہے۔ اس ویب سائیٹ کی رپورٹ کے مطابق حجاج کرام کی صحت وسلامتی کے لیے صحت کے شعبے کے 30 ہزار 908 افراد پرمشتمل عملہ تعینات کیا گیا ہے۔ ان میں 8 ہزار 685 خواتین ہیں۔ طبی عملہ وزارت صحت، سعودی ہلال احمراور جنرل اتھارٹی برائے فوڈاینڈر ڈرگس کے ملازمین پرمشتمل ہے۔ سیکیورٹی اداروں کے طبی عملے کے افراد اور ایمبولینس سروس کی ٹیموں پر مشتمل مجموعی طور پر 1141 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق وزارت صحت کی طرف سے عازمین حج کو مفت طبی سروسز فراہم کی گئی ہیں۔ ڈاکٹروں، ڈسپنسرز، نرسوں، تکنیکی اور انتظامی عملے کے اہلکاروں کی تعداد 27 ہزار 797 ہے جو اس وقت مشاعر مقدسہ اور عازمین حج کی قیام گاہوں میں ان کی مدد کررہے ہیں۔ یہ طبی عملہ عازمین حج کے امراض قلب، دل کی سرجری، ڈائیلائیسز،معدے کے امراض اور زچگی کے کیسز میں مدد فراہم کررہے ہیں۔ عازمین حج کے لیے مکہ مکرمہ میں 16 بڑے اسپتال مختص کیے گئے ہیں۔ وزارت صحت کی طرف سے مشاعر مقدسہ میں 125 ہنگامی طبی مراکز اور 68 طبی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔

ہلال احمر کی طرف سے مکہ معظمہ میں 132 طبی مراکز، 370 ایمبولینس گاڑیاں، 20موٹرسائیکلیں، 2811 افراد پرمشتمل طبی عملہ متعین کیا گیا ہے۔