.

مناسک حج کے پہلے روز فرزندان توحید منی کی خیمہ بستی میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مناسکِ حج کے پہلے دن آج لاکھوں کی تعداد میں عازمین مکہ مکرمہ سے 8 کلومیٹر دور مِنیٰ پہنچ رہے ہیں۔ عازمین کی مِنی آمد کا سلسلہ جمعے کو رات گئے تک جاری رہے گا۔ مِنیٰ میں رات گزارنے کے بعد کل ہفتے کے روز 9 ذو الحجہ کو صبح فجر کے بعد عازمین حج عرفات کا رخ کریں گے جہاں حج کا رکن اعظم یعنی "وقوف عرفات" ادا کیا جائے گا۔

منی میں مناسک حج کا پہلا روز گزارنے کے لیے عازمین نے جمعرات کی رات سے ہی منی روانگی کا آغاز کر دیا تھا۔ مناسک کا پہلا روز "یوم الترویہ" کہلاتا ہے اور اس روز عازمین حج سنت مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی پیروی کرتے ہوئے پورا دن منی میں گزارتے ہیں۔

مکہ مکرمہ سے منی منتقلی کے سلسلے میں عازمین حج کو لے جانے والی گاڑیوں اور بسوں کے لیے ٹریفک کا منظم پلان ترتیب دیا گیا تا کہ حجاج کے قافلے آسانی کے ساتھ منزل مقصود تک پہنچ سکیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے کیمرے کی آنکھ نے مکہ مکرمہ میں اللہ کے مہمانوں کی منی کی جانب روانگی کے مناظر کو محفوظ کر لیا۔

سعودی وزارت داخلہ کے سرکاری ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے ایک پریس کانفرنس کے دوران باور کرایا کہ کسی بھی فرد یا گروپ کو حج کے عمل میں رخنہ ڈالنے یا حجاج کرام کی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔