.

رواں سال حج میں کوئی وبائی کیس سامنے نہیں آیا: سعودی وزارت صحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت صحت کے سرکاری ترجمان ڈاکٹر محمد عبد العالی نے باور کرایا ہے کہ رواں سال حجاج کرام کی عمومی صحت کی صورت حال اطمینان بخش ہے اور کوئی وبائی کیس سامنے نہیں آیا۔

ڈاکٹر محمد عبدالعالی کے مطابق وزارت صحت نے 20 ہزار سے زیادہ عازمین حج کو ہنگامی خدمات اور 1096 حالتوں میں hypnotherapy کی خدمات فراہم کی گئیں۔ بیرونی ڈسپنسریوں میں 4617 حجاج کا استقبال کیا گیا جب کہ طبی مراکز میں ایک لاکھ سے زیادہ حجاج کو خدمات فراہم کی گئیں۔ موبائل کلینکس میں 7500 مرد اور خواتین حجاج کو علاج کی سہولت فراہم کی گئی۔ حجاج کرام میں دل کے مریضوں کے مجموعی طور پر 165 آپریشن کیے گئے ان میں 158 کیسCardiac catheterization اور 7 کیس اوپن ہارٹ سرجری کے تھے۔ تقریبا ایک ہزار سے زیادہ گردوں کے مریض حجاج کرام کا ڈائلائسس کیا گیا۔ اس کے علاوہ 51 حجاج کرام کی Laparoscopy کی گئی۔

وزارت صحت کے ترجمان نے بتایا کہ جو مریض عمومی ٹرانسپورٹ کے ذریعے نارمل طریقے سے حرکت کے قابل نہیں ہوتے انہیں موزوں نوعیت کی سواری کے ذریعے خصوصی خدمات فراہم کی جاتی ہیں۔ ایسے عازمین حج کو پروٹوکول کے ساتھ وقوف عرفات کے لیے منتقل کیا جاتا ہے تا کہ وہ حج کا رکن اعظم ادا کر سکیں۔ اس کے بعد ان مریضوں کو دوبارہ علاج پورا کرنے کی غرض سے واپس لایا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ سعودی وزارت صحت نے رواں سال حج سیزن میں کام کرنے کے لیے اپنے 30 ہزار طبی اہل کاروں کو بھرتی کیا ہے۔

اسی طرح حجاج کرام کو مختلف زبانوں میں طبی مشاورت اور سوالات کے جوابات فراہم کرنے کے لیے 937 پر چوبیس گھنٹے کال کی سہولت پیش کی گئی ہے۔