.

طواف افاضہ کے بعد حجاج کرام کا منیٰ میں قیام، مختلف مناسک کی تصاویر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کل جمعہ المبارک کو حجاج کرام مناسک حج کی ادائی کے دوران طواف افاضہ کی ادائی کے بعد منیٰ کی طرف واپس لوٹ گئے۔ طواف افاضہ کے موقع پر مسجد حرام میں اللہ کے مہمانوں کی بڑی تعداد جمع ہوئی۔ طواف کے موقع پر حجاج کرام کی صحت کی حفاظت کے لیے تمام ضروری اقدمات کیے گئے تھے۔ تمام مشاعر مقدسہ کی طرف مسجد حرام میں سینیٹائرز کا اسپرے کیا گیا۔

سعودی وزارت صحت کے مطابق حجاج کرام میں کرونا کا کوئی مریض سامنے نہیں آیا اور نہ ہی کسی دوسرے حادثے میں کسی شہری کے کرونا سے وفات پانے کی اطلاع ملی ہے۔

قبل ازیں حجاج کرام نے 10 ذی الحج کو عید الاضحیٰ پر عید کی قربانی دی۔ منیٰ کے جمرہ عقبہ میں رمی جمرات کیا۔ اس سے قبل عرفات میں خطبہ حج سنا اور مزدلفہ کی طرف روانہ ہوئے۔

وزارت حج کی طرف سے اس بار رمی جمرات کے لیے تمام حجاج کرام کے جراثیم سے پاک پیک شدہ کنکریاں دی گئی تھی۔

وزارت حج وعمرہ کی طرف سے وضع کردہ طریقہ کار کےمطابق تمام حجاج کرام کو ایک ہی وقت میں طواف کے لیے جانے کی اجازت نہیں دی گئی بلکہ طواف کعبہ کے لیے چھوٹی چھوٹی ٹولیوں کی شکل میں حجاج کرام کو مطاف میں جانے اور ڈیڑھ سے دو میٹر کا فصلہ رکھنے کی ہدایت کی گئی تھی۔

طواف ، مسجد حرام میں نمازوں کی ادائی اور مشاعر مقدسہ میں مناسک حج کی ادائی کے دوران حجاج کرام میں سماجی فاصلہ یقینی بنانے کے لیے الگ الگ واکنگ ٹریک بنائے گئے تھے۔