.
حج وعمرہ

حج کے ایام میں ’مشاعر گرین‘ پروگرام کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مکہ معظمہ اور مقدس مقامات کے لیے رائل کمیشن اور ’کدانا‘ ڈویلپمنٹ کمپنی نے نے حج کے سیزن کے موقعے پر "گرین مشاعر" اقدام کا آغاز کیا ہے۔ یہ پروگرام سعودی عرب کے "گرین سعودی عرب" اقدام کے ساتھ مطابقت رکھتا ہے۔ اس کا مقصد نجی شعبے کے ساتھ شراکت سے ماحولیات کو بہتر بنانے اور زمین و فطرت کو ناجائز استعمال سے بچانے کے لیے سعودی عرب کےاہداف کے حصول کو یقینی بنانا ہے۔ اس پروگرام کے ذریعے حج سیزن کے موقعے پرمقس مقامات میں جمع ہونے والے 260 ٹن نامیاتی اور ٹھوس فضلہ کو ٹھکانے لگانا ہے۔

سعودی عرب میں قومی اقدام "گرین سعودی" کا مقصد معیار زندگی کو بہتر بنانا اور آئندہ نسلوں کی حفاظت کرنا ہے۔ مملکت کے اندر اور باہر استحکام اور خوشحالی کے حصول کے لیے صاف اور قابل تجدید توانائی پر انحصار بڑھانا ہے۔ کارکن کے اخراج کو 4 فی صد تک کم کرکے زمین میں فضلہ کو ٹھکانے لگانے کے 94فی صد تناسب کے حصول کے ذریعے عالمی سطح پرماحولیاتی تحفظ میں مملکت کی شرکت کو یقینی بنانا اس پروگرام کے مقاصد میں شامل ہے۔

’گرین مشاعر‘ اقدام کے پروگرامات

’گرین مشاعر‘ اقدام مین متعدد پروگرامات شامل ہیں۔ ان پروگرام میں ایک پروگرام کو’حرام اقدام‘ قرار دیا جاتا ہے۔ اس پروگرام کا مقصد احرام کے کپڑے سے بچ جانے والے فالتو ٹکڑے ری سائیکل کرکے انہیں نئی مصنوعات کی تیاری میں ڈھالنا ہے۔ اس پروگرام کے ذریعے تیار ہونے والی مصنوعات درآمد مصنوعات کی قیمتوں کی نسبت 45 فی صد کم قیمت پر دستیاب ہوں گی۔

گرین مشاعر اقدام کے پروگرامات میں ایک پروگرام’تدویر‘ کے نام سے متعارف کرایا گیا ہے۔ اس پروگرام کا مقصد ٹھوس فضلہ (پلاسٹک کے کین) کو چھانٹ جمع کرنے اور اسے ری سائیکل کرکے ان خام مال سے نئی مصنوعات کی تیاری شامل ہے۔

تیسرے پروگرام میں نامیاتی فضلہ کو چھانٹنے ، جمع کرنے اور اس کو ٹھکانے ، اس کی مدد سے قدرتی کھاد تیار کرنے کی کوشش کرنا ہے تاکہ مٹی کی زرخیزی میں اضافہ ہو اورزمین میں آب پاشی کے بعد نمی اور پانی کو برقرار رکھنے کی صلاحیت بہتر بنائی جاسکے۔

4’طہارت‘ پروگران کا مقصد مقدس مقامات میں حجاج کرام اور امدادی کارکنوں کے لیے 90،000 اسٹرلائز اور ذاتی حفظان صحت کٹ تقسیم کرنا۔ منیٰ کے سایہ دار راستے پر پیدل چلنے والے سڑک کے بیت الخلاء کو چلانے اور صاف کرنے کے لیے حجاج کرام کو آگاہی فراہم کرکے ماحولیات تحفظ کے حصول کو ممکن بنانا ہے۔ مخلتف طبی ٹیموں کے ذریعے حجاج کرام کو صحت وصفائی کے حوالےسے رہ نمائی فراہم کی جائے گی۔ سینی ٹائزر کے استعمال، ہاتھوں کو صاف کرنے اور حج کے موقعے پرطہارت کی اہمیت کو اجاگر کیا جائےگا۔