.

شیطانوں کو کنکریاں مارنے کے دوران کوئی ناخوش گوار حادثہ رپورٹ نہیں ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حجاج کرام ایام کے تیسرے روز رمی جمرات جاری رکھے ہوئے ہیں۔ گذشتہ روز صغریٰ، وسطیٰ اور کبریٰ رمی جمرات کی گئیں۔ رمی جمرات کے دوران حجاج کرام کی صفوں میں کوئی حادث پیش نہیں آیا۔

العربیہ کے نامہ نگار نے بتایا کہ حکام کی طرف سے حجاج کرام کے منی میں خیموں سے نکلنے سے لے کر جمرات تک 540 مانیٹرنگ کیمروں سے نگرانی کی جاتی ہے۔

معذور حجاج شیطانوں کو کنکریاں مار رہے ہیں
معذور حجاج شیطانوں کو کنکریاں مار رہے ہیں

اس کے علاوہ جگہ جگہ پر پولیس، شہری دفاع کا عملہ اور دیگر رضا کار تعینات ہیں جس کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے تیار ہیں۔

جمرات
جمرات

طواف افاضہ کی تکمیل کے بعد حجاج کرام منیٰ میں موجود اپنے خیموں میں پہنچ گئے ہیں۔ حجاج کرام 11 ذی الحج تک تینوں ایام تشریق کے دوران رمی جمرات کریں گے۔

خواتین رمی کے دوران
خواتین رمی کے دوران

حجاج کرام نے گذشتہ روز منگل کو مکہ مکرمہ میں طوافِ زیارت کیا اور اس کے بعد منی واپس پہنچ گئے۔ اس سلسلے میں سعودی حکام نے اللہ کے مہمانوں کی سلامتی کو یقینی بنانے کے لیے تمام تر احتیاطی اقدامات اور حفاظتی تدابیر کو مکمل طور پر لاگو کیا ہوا ہے۔