.

انسانی ہمدردی کے جذبات سے لبریز حرم مکی کے سیکیورٹی اہلکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حجاج کرام کی خدمت میں شریک مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے سعودی سیکیورٹی اہلکاروں نے عازمین حج کی حفاظت اور انہیں منظم رکھنے کے لیے انتہائی حیرت انگیز مثالیں قائم کی ہیں۔ سیکیورٹی اہلکار حجاج کرام پر جہاں دست شفقت رکھتے ہیں وہیں ہرطرح کے حالات پر ہمہ وقت چوکس اور بیدار رہتے ہیں تاکہ بیت اللہ اور مقدس مقامات کی زیارت کے آئے حجاج کرام سکون فراہم کریں اور ان کی مدد کرنے اور ان کی ضروریات کو چوبیس گھنٹے پورا کرنے کے لیے کام کریں۔

سعودی سیکیورٹی اہلکاروں کی انسانی ہمدردی بہت سے مناظر اور حالات میں عیاں تھی۔ کڑی دھوپ اور شدید گرمی کے ایام میں وہ سخت حفاظتی دھار اور تیز گرمی کے نیچے کھڑے سیکیورٹی کے فرائض انجام دینے والے ایک انسان کی طرف سے پوری دنیا کی طرف سے آنے والے حجاج کرام کو انسانیت کا پیغام ملتا ہے۔ وہ شدید گرمی میں چاک وچوبند اور چوکس کھڑے رہ کربہ زبان حال یہ پیغام دیتے ہیں کہ وہ یہاں پر صرف اللہ کے مہمانوں کی خدمت پر مامور ہیں۔ وہ حجاج سے نرمی ،شفت اور مہربانی سے پیش آتے ہیں مگر ساتھ ہی وہ اپنی حفاظت کی ذمہ داریوں سے ایک لمحے کے لیے بھی غافل نہیں ہوتے۔

سیکیورٹی اہلکار حج سیزن کے دوران بڑی ذمہ داری اور کاموں کی کثرت ، اور خدا کے مقدس گھر کے حجاج کے ساتھ رحمت اور شفقت ،سب ایک ساتھ ساتھ جاری رہتےہیں۔

حج کے موقعے پر فوٹوگرافروں نے سیکیورٹی اہلکاروں کی طرف سے مسجد حرام اور مشاعر مقدسہ میں موجود حجاج کرام کی مدد کی تصاویر بھی حاصل کیں۔ ان مناظر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کوئی سیکیورٹی اہلکار شدید گرمی میں کسی حاجی پر ٹھنڈے پانی کاچھڑکاؤ کررہا ہے۔ کوئی کسی کے گم شدہ ساتھی کے بارے میں اس کی رہ نمائی کررہا ہے اور کوئی کسی حاجی کی مدد کرتا نظر آتا ہے۔الغرض محفاظین حرمین شریفین سیکیورٹی کی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کے ساتھ ساتھ انسانی ہمدردی کے جذبات سے بھی لبریز ہیں۔