مدینہ کے اسپتالوں میں زیر علاج عازمین حج فریضے کی ادائی کے لیے مکہ روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کل منگل صبح پانچ بجے سعودی وزارت صحت کا ایک قافلہ دو سال کے وقفے کے بعد شاہ سلمان میڈیکل سٹی سے مختلف ممالک سے آئے عازمین حج کے ایک قافلے کے ساتھ مکہ معظمہ کے لیے روان ہوا۔دو سال قبل مدینہ منورہ کے اسپتالوں میں زیرعلاج مریض عازمین حج کو مکہ مکرمہ بھیجے جانے کا عمل اس وقت معطل ہوا جب سعودی عرب سمیت پوری دنیا میں کرونا وبا پھیل گئی تھی۔

سعودی وزارت صحت کے حکام نے دو سال کے وقفے کےبعد مدینہ کے اسپتالوں میں داخل حج کےقابل عازمین حج کو مکہ مکرمہ پہنچایا تاکہ وہ 1443ھ کے حج میں شامل ہوسکیں۔

قافلے کی ٹیم میں 14 ایمبولینسیں جن میں 9 زائرین تھے، ایک انتہائی نگہداشت کی ایمبولینس، ایک مربوط آکسیجن کیبن، ایک موبائل فرسٹ ایڈ ورکشاپ، ایک بس اور قافلے میں 60 افراد پر مشتمل طبی عملہ شامل ہے۔

"مدینہ ہیلتھ کملیکس" نے ابتدائی تاریخ سے ہی مدینہ منورہ کے گورنر شہزادہ فیصل بن سلمان بن عبدالعزیز کی نگرانی میں متعلقہ حکام کے ساتھ مل کر حجاج کی گروپ بندی کے تمام طریقہ کار مکمل کر لیے تھے۔

سعودی وزارت صحت نے پہلے بتایا تھا کہ مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں اسپتالوں اور صحت کے مراکز کے ذریعے علاج معالجے کی خدمات حاصل کرنے والے عازمین کی تعداد 11/1/1443ھ سے اب تک 43,425 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

اس سال حج کے سیزن کے دوران مکہ مکرمہ، مقدس مقامات اور مدینہ منورہ میں وزارت صحت نے عازمین کو علاج معالجے کی خدمات فراہم کرنے کے لیے بھرپور تیاری کی ہے۔حج سیزن کے لیے ہنگامی بنیاد پر 23 اسپتال تیار کیے گئے ہیں۔ 147 مراکز صحت ان اسپتالوں کو معاونت فراہم کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں