حج سیزن

حجاج کے قافلے میدان عرفات میں خیمہ زن، علاقے کی فضا میں تلبیہ سے گونج رہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

آج نو ذی الحج جمعہ حجاج کرام کے قافلے عرفات کی سطح کی طرف روانہ ہورہے ہیں۔عازمین حج کے قافلوں کو مختلف سکیورٹی اداروں کی طرف سے فول پروف سیکیورٹی مہیا کی گئی ہے تاکہ حجاج کرام کو منظم کرنے کے کے ساتھ ان کی رہ نمائی اور ضروری حفاظت کو یقینی بنایا جا سکے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق عرفات کی طرف جانے والی سڑکوں کے ساتھ ٹریفک پولیس، سکیورٹی اہلکار اور محافظ تعینات کئے گئے ہیں تاکہ عازمین حج کی میدان عرفات کی طرف لچکدار نقل و حرکت کو یقینی بنائی جا سکے۔

اس کے علاوہ مشاعرمقدسہ کے مختلف حصوں میں طبی، ہنگامی اور کیٹرنگ کی خدمات فراہم کی گئی ہیں اور حجاج کرام کی ضروت کے لیے اقدامات کئے گئے ہیں۔

اللہ کے قرب اور اس کی خوشنودی کے حصول کا عزم اور جذبہ لیے لاکھوں حجاج کرام مقام عرفات کی وادی عرنہ کی طرف رواں دواں ہیں۔

اس دن سورج غروب ہوتے ہی حجاج مزدلفہ کا سفر شروع کریں گےاور مغرب اور عشاء کی نمازیں وہیں ادا کریں گے۔ کل دس ذی الحج کی فجر تک وہیں قیام کریں گے۔ مزدلفہ میں قیام فرض ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے وہیں رات گذاری اور فجر کی نماز وہیں ادا کی۔

رمی جمرات

کوہ عرفات مکہ کے مشرق میں 20 کلومیٹر سے زیادہ کے فاصلے پر واقع ہے اور یہ ایک ہموار میدان منیٰ کے مقام سے دس کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔ جہاں عازمین کل عید الاضحی کے پہلے دن رمی جمرات کریں گے۔

قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب نے گذشتہ دو سال کے دوران بیرون ملک سے آنے والے عازمین پر پابندی عائد کر دی تھی اور کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے خصوصی شرائط کے ساتھ اندرون ملک مقامی اور مقیم مسلمانوں نے حج ادا کیا۔

اس سال کا حج 65 سال سے کم عمر کے لوگوں کے لیے ہے، جس میں سعودی وزارت صحت کی طرف سے منظور شدہ کوویڈ 19 ویکسین کی بنیادی خوراکوں کے ساتھ حفاظتی ٹیکوں کا کورس مکمل کرنے کی شرط عاید کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں