حج سیزن

حجاج کرام نے میدان عرفات کا سفر شروع کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مکہ المکرمہ کے نواح میں واقع منیٰ میں حاجیوں کی خیمہ بستی میں غروب آفتاب کے بعد احرام میں ملبوس اللہ کے مہمانوں نے میدان عرفات کی جانب رخت سفر باندھ لیا تاکہ جمعہ المبارک کا سورج وہ عرفات کے میدان میں طلوع ہوتا دیکھ سکیں۔

حاجیوں کے لیے میدان عرفات میں جمع ہونا انتہائی ضروری ہے، حتی کہ اس موقع پر شدید بیمار اور مرض الموت میں مبتلا حجاج کو بھی سعودی حکومت کے خصوصی انتظامات کے تحت میدان عرفات لایا جاتا ہے تاکہ وہ حج کا رکن اعظم وقوف ادا کر سکیں کیونکہ جس کا وقوف عرفات رہ گیا، گویا اس کا حج بھی مکمل نہ ہو سکا۔

’’العربیہ‘‘ کے مطابق آٹھ لاکھ ضیوف الرحمن کو منیٰ سے سات مخصوص راستوں کے ذریعے عرفات کے میدان لے جانے کی خاطر 9500 آرام دہ بسوں کا انتظام کیا گیا ہے۔ نیز دو لاکھ حاجیوں کو مشاعر ٹرین کے ذریعے بھی میدان عرفات پہنچایا جائے گا۔

ایک ملتی جلتی پیش رفت میں میدان عرفات اور بالخصوص اس میں واقع جبل رحمت کی اچھی طرح دیکھ بھال کے بعد پورے علاقے کو ایک نئی لک دی گئی ہے جو دیکھنے والوں کو بھلی معلوم ہوتی ہے۔ نیز وہاں حاجیوں اور زائرین کے لیے تمام عصری سہولیات بھی بہم پہنچائی گئیں ہیں۔

حجاج اور زایرین کو فراہم کی جانے والی خدمات میں بسوں کا پارکنگ اسٹینڈ، نئے جدید بیت الخلا، روشنی اور ماحول میں بہتری کے لئے پھوار سپرے کرنے والے پنکھے ایسی نمایاں سہولیات ہیں کہ جو ہر حاجی وہاں یقین کی آنکھ سے دیکھ سکے گا۔

میدان عرفات میں گرین ایریا، جاگنگ ٹریک سمیت کھانے پینے کی اشیا کے لیے کیفے، رہمنائی ڈیسک، ٹی وی چینلز کے سٹالز، اوبزرویشن پوسٹ ایسی نمایاں سہولیات ہیں کہ جن کے بغیر اتنی بڑی تعداد میں آنے والے اللہ کے مہمانوں کی میزبانی کا فرض کما حقہ ادا نہیں ہو سکتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں