حج سیزن

مسجد حرام 1,700 سے زیادہ مرد اور خواتین رضاکاروں کا اندراج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین نے مسجد حرام میں 1,760 رضاکار کی رجسٹریشن کی ہے۔ ان میں خواتین اور مرد رضا کار شامل ہیں۔ یہ رضا کارمسجد حرام میں انسانی، سماجی اور دیگر امور میں عازمین حج کی 30 ہزار گھنٹے خدمت کریں گے۔

اس تناظر میں مسجد حرام میں رضاکارانہ کام کے رابطہ کاری کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر جنرل عادل بن راجا اللہ الجہنی نے کہا کہ صدارت عامہ نے رضاکاروں کو اس قابل بنایا کہ وہ اللہ گھر میں حجاج کی خدمت کے لیے کام کر سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مملکت کے وژن 2030 تک رضا کاروں کی تعداد 10 لاکھ تک پہنچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ رضاکارانہ کام ایک مربوط ادارہ جاتی اور تنظیمی فریم ورک کے اندر فراہم کیا جاتا ہے، جس کے ذریعے انسانی ہمدردی اور خصوصی رضاکارانہ پروگراموں کے اعلیٰ ترین معیار اور مقاصد حاصل کیے جاتے ہیں۔

انہوں نے وضاحت کی کہ صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین نے متعدد انسانی اور خصوصی شعبوں میں رضاکارانہ کام کرنے اور خدمات انجام دینے کی اجازت دی، جن میں قرآن پاک حفظ کرنے کے خصوصی شعبے، انجینئرنگ خدمات، ترجمہ، زبانیں اور شماریات، معذور افراد کے لیے انسانی خدمات، گاڑیوں کو دھکیلنا شامل ہیں۔ بوڑھوں کی مدد، ہجوم کو منظم کرنا، راہداریوں کو منظم کرنا، مقامی رہ نمائی اور گمشدہ افراد کی حفاظت کرنا جیسی خدمات شامل ہیں۔

انہوں نے یہ بھی مزید کہا کہ مسجد حرام میں رضاکار 17 سرکاری اور خیراتی اداروں کے فریم ورک کے اندر آتے ہیں۔ ان کی نگرانی ڈیجیٹل اور الیکٹرانک تعاون اور وزارت انسانی وسائل کے ساتھ ہم آہنگی کے ذریعے کی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں