حج سیزن

رمی جمرات میں شیطان کو کنکریاں کا عمل سبک رفتاری سے کیسے انجام پاتا ہے؟

چھ منزلہ جمرات پل کی ایک منزل پر فی گھنٹہ ایک لاکھ بیس ہزار حجاج رمی کر سکتے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

دس ذی الحجہ کی صبح سے حجاج کرام رمی جمرات ۔ بڑے شیطان [الجمرہ الکبری] المعروف جمرہ العقبہ کو سات کنکریاں مارنے کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ یہ مرحلہ گذشتہ روز میدان عرفات میں عبادت اور دعاؤں کے بعد مزدلفہ میں رات گذار کر وہاں سے کنکریاں جمع کرنے کے بعد شروع ہوا۔ مقامات مقدسہ کے درمیان حاجیوں کی نقل وحرکت پہلے سے طے کردہ منصوبے کی روشنی میں انتہائی سبک رفتاری سے جاری رہی۔

منیٰ میں جمرات برج پر لاکھوں انسانوں کی نقل وحرکت کو سبک رفتاری سے جاری رکھنے کے لئے ایسے معاون خدمات فراہم کی گئی ہیں جن سے حاجیوں کو اپنے مناسک ادا کرنے میں سہولت رہتی ہے۔ رمی جمرات کا فریضہ ادا کرنے والے حجاج یہاں چھ منزلہ ٹاورز استعمال کرتے ہیں۔ ہر ٹاور کی بلندی 12 میٹر ہے اور اس سے ایک گھنٹے کے اندر ایک لاکھ بیس ہزار افراد گذر سکتے ہیں۔ ایک گھنٹے میں پانچ لاکھ حاجی رمی جمرات کا فریضہ ادا کر سکتے ہیں۔

جمرات برج میں سروس کے لئے 12 منزلوں پر مشتمل چھ عمارتیں بھی موجود ہیں۔ دو عمارتوں پر ہیلی پیڈز اور ہنگامی صورت میں فلوز کے درمیان ایمبولینس کی نقل وحرکت کے راستے بھی موجود ہیں۔ ہر سروس بلڈنگ میں تین الیکٹریکل سٹیشنز اور بیک اپ جینرٹرز موجود ہیں۔ ان پلوں میں سیڑھیوں والی گیارہ عمارتیں بھی ہیں۔ چار عمارتوں کے ذریعے حجاج کی فلور میں داخلے کے وقت نقل وحرکت یقینی بنائی جاتی ہے جبکہ سات عمارتیں حجاج کرام کو پلوں سے باہر نکالنے میں مدد دیتی ہیں۔

سیڑھیوں والی پر عمارت میں بلڈنگ مینجمنٹ سسٹم سے منسلک 28 برقی زینے موجود ہیں۔ پلوں کے گرد بیس برقی زینوں کو ملا کر سڑھیوں کی تعداد 328 بنتی ہے۔

پلوں پر نصب سسٹمز

جمرات کے پلوں پر 13 جدید سسٹمز کام کر رہے ہیں۔ ان میں 900 کیمروں کے ذریعے ٹی وی نگرانی کا نظام، چار چینلز کے لئے نقل وحرکت کی نشریات فراہمی کا نظام، رہنما پیغام رسانی سسٹم، 90 کیمروں کی مدد سے مجمع کی گنتی کرنے والا سسٹم، تین ہزار دیو ہیکل سپیکروں سے جڑا ہوا پبلک کال سسٹم، بلڈنگ مینجمنٹ سسٹم [جس میں آگ سے خبردار کرنے والے آلارم، آگ بجھانے والے نظام، کوڑا کرکٹ تلفی کا نظام، بلا تعطل برقی رو کے لئے یو پی ایس سسٹم، سرنگوں کی نگرانی کا نظام، کاربن مانو آکسائیڈ کا لیول جانچنے کا نظام، سرنگوں کے اندر حد نظر جانچنے کا نظام اور 226 ماحول دوست الیکڑک گاڑیاں جنہیں حجاج کرام کو جمرات برج اور دوسرے منصوبوں تک نقل وحرکت کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔

پلوں کے اندر ٹھنڈی ہوا کی فراہمی کے لیے 456 ڈیزرٹ کولز لگائے گئے ہیں۔ یہاں 90 پھوار والے پنکھے، 78 سینٹرل ایئر کنڈیشنرز، 182 سپلٹ ایئر کنڈیشنرز اور 104 واٹر پمپس کے ذریعے حجاج کی ضروریات کا خیال رکھا جا رہا ہے۔

پل کو ملانے والی 04 سرنگیں

اسی طرح جمرات پل کو الشعيبين کے مقام سے تیسرے فلور تک چار سرنگوں کے ذریعے ملایا گیا ہے۔ ان سرنگوں کی لمبائی تقریباً ساڑھے تین کلومیٹر بنتی ہے۔ سرنگوں میں حاجیوں کو لے جانے کی خاطر 46 برقی واک ویز بنائے گئے ہیں جو ریموٹ کنڑول سسٹم کے توسط سے SCADA نظام سے منسلک ہیں۔ یہ واک ویز حفاظتی اور آگ سے خبردار اور بجھانے والے نظام سے مربوط ہیں۔ پبلک اپیل سسٹم بھی ان سرنگوں سے جڑا ہوا ہے اور سرنگوں کو آتشزدگی کی صورت میں ایک دوسرے سے الگ کرنے کا نظام بھی حاجیوں کے اطمینان اور سلامتی کو یقینی بناتا ہے۔

جمرات منصوبے کو مکہ کے العزیزیہ محلے سے دوسرے منزل کے ساتھ ملانے کی خاطر 485 میڑ طویل دو سرنگیں بنائی گئیں ہیں، جہاں چار برقی زینے اور چار کلومیڑ طویل گذرگاہ بنائی گئی ہے۔ یہ منصوبہ تین گرڈ اسٹیشنز سے جڑا ہوا ہے جہاں پر ریموٹ کنڑول SCADA آپریشنل رہتا ہے تاکہ منصوبے کے اندر فراہم کردہ حفاظتی انتظامات، پبلک ایڈریس سسٹم اور داخلی رابطوں کو ہنگامی صورت میں بحال اور فعال رکھا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں